1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

شمالی وزیرستان میں ڈرون حملہ، گیارہ ہلاک

پاکستان کے قبائلی علاقے شمالی وزیرستان میں ایک مبینہ امریکی ڈرون حملے کے نتیجے میں کم از کم دس عسکریت پسند ہلاک اورمتعدد زخمی ہوگئے ہیں۔

default

ڈرون حملوں میں طالبان کے کئی اہم لیڈر مارے جا چکے ہیں

اطلاعات کے مطابق منگل روز شمالی وزیرستان ایجنسی کے صدرمقام میرانشاہ سے تقریبا بیس کلو میٹر دور دتہ خیل کے پہاڑی علاقے میں واقع جنگجوؤں کے ایک کمپاؤنڈ کو میزائل سے نشانہ بنایا گیا جہاں پاکستانی سیکیورٹی اداروں کےاہلکاروں کے مطابق گیارہ مبینہ عسکریت پسند مارے گئے ہیں جن میں اکثریت غیرملکیوں کی ہے۔

مقامی انتظامیہ کے مطابق طالبان نے فوری طور پر علاقے کو گھیرے میں لے لیا ہے۔ واضح رہے کہ مبینہ امریکی ڈرون طیارے اکثر پاکستانی قبائلی علاقوں میں کارروائیاں کرکے طالبان رہنماؤں کو نشانہ بناتے ہے۔ واشنگٹن حکومت کے مطابق یہ علاقے القاعدہ کے ہیڈ کوارٹرز ہیں۔ یہ علاقہ افغانستان کے صوبے خوست کے قریب پاک افغان سرحد پر واقع ہے۔ ان ڈرون حملوں کے نتیجے میں طالبان رہنما بیت اللہ محسود اور ان کے جانشین حکیم اللہ محسود سمیت القاعدہ کے کئی اہم کمانڈر ہلاک ہو چکے ہیں ۔ دوسری جانب پاکستان میں ان حملوں کے خلاف احتجاج میں بھی اضافہ ہوا ہے۔ امریکی اہلکاروں کے مطابق ڈرون حملے القاعدہ کو شکست دینے کا سب سے مؤثر ہتھیار ہے۔

رپورٹ : بخت زمان

ادارت : عاطف بلوچ