1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

شدت پسندی کے خلاف پاکستان کا کردار قابل تحسین ہے، امریکہ

امریکہ نے انتہاپسندی کے خلاف پاکستانی کارروائیوں کا خیرم مقدم کیا ہے۔ اس مرتبہ اسلام آباد کے لئے تعریفی کلمات امریکی صدر باراک اوباما کی جانب سے سامنے آئے ہیں۔ انہوں نے پاکستانی کارروائیوں کو حوصلہ افزاء قرار دیا ہے۔

default

باراک اوباما نے یہ کہتے ہوئے خبردار بھی کیا کہ پاکستان میں شدت پسندوں کے خاتمے میں وقت لگے گا۔ انہوں نے کہا، ’پاکستان میں یہ صورت حال سرطان کی طرح پھیل رہی ہے، اور میں سمجھتا ہوں کہ گزشتہ کچھ عرصے میں اس بات کو ویسع پیمانے پر تسلیم کیا جا چکا ہے۔ جو کچھ میں نے پاکستانی حکومت کی جانب سے گزشتہ مہینوں میں دیکھا ہے، وہ میرے لئے حوصلہ افزاء بھی ہے۔

وائٹ ہاؤس میں بدھ کو افغانستان کے صدر حامد کرزئی کے ساتھ مشترکہ نیوز کانفرنس سے خطاب میں امریکی صدر نے کہا کہ گزشتہ 30 برس کی جنگ کے نتیجے میں افغانستان کو معاشی طور پر ابھرنے میں کچھ وقت لگے گا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کی جانب سے بھی خواہش ہونے کے باوجود کچھ وقت درکار ہے، جس میں وہ ناقص انتظام والے علاقوں میں انتہاپسندوں پر قابو پانے کا مؤثر طریقہ ڈھونڈ نکالیں گے۔

Barack Obama Unternehmer Gipfel Flash-Galerie

امریکی صدر باراک اوباما

باراک اوباما نے کہا کہ پاکستان نے ایسے علاقوں کا زیادہ سے زیادہ کنٹرول اپنے ہاتھ میں لینے کی خواہش دکھائی ہے، جو حوصلہ افزاء ہے، لیکن یہ سب راتوں رات نہیں ہونے والا۔

واضح رہے کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان امریکہ کا ایک اہم اتحادی ہے۔ گزشتہ ماہ امریکی محکمہ دفاع نے پاکستان میں طالبان کے خلاف جاری فوجی آپریشن سے متعلق ایک رپورٹ ملکی کانگریس کو پیش کی، جس میں اس آپریشن کو سراہا گیا۔

پینٹا گون نے اپنی رپورٹ میں کہا کہ پاکستان کے ایک لاکھ 40 ہزار فوجی قبائلی علاقوں میں شدت پسندوں کے خلاف لڑ رہے ہیں۔ رپورٹ میں یہ بھی کہا گیا کہ قبائلی علاقوں میں پاکستانی فوج کا آپریشن سرحد پار بھی اثرات رکھتا ہے، اس سے دشمن طاقتوں پر دباؤمیں اضافہ ہوا ہے اور افغانستان کے مشرقی علاقوں میں بھی ان کے ٹھکانے کم ہوئے ہیں۔

امریکہ ایک طویل عرصے سے اسلام آباد حکام پر دباؤ ڈالتا رہا ہے کہ وہ اپنی سرزمین پر طالبان اور القاعدہ رہنماؤں کے خلاف کارروائی کریں

Pakistan Soldaten in einer Taliban Höhle in Waziristan

پاکستانی فوج قبائلی علاقوں میں طالبان کے خلاف آپریشن کر رہی ہے

جبکہ پینٹاگون نے اپنی رپورٹ میں کہا کہ قبائلی علاقوں میں پاکستان کی جانب سے تعیناتیوں کے اس سلسلے کی تاریخ میں مثال نہیں ملتی۔

پینٹا گون نے پاکستان میں طالبان رہنماؤں کی حالیہ گرفتاریوں کو بھی سراہا۔ اس کا کہنا تھا کہ ملا عبدالغنی برادر جیسے رہنماؤں کی گرفتاریوں سے شدت پسند اپنے ٹھکانوں کے غیر محفوظ ہونے پر تشویش میں مبتلا ہو گئے ہیں ۔ اس کے ساتھ ساتھ ان کے مالی مسائل میں بھی خاطر خواہ اضافہ ہوا ہے۔

رپورٹ: ندیم گِل

ادارت: عابد حسین