1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

NRS-Import

شام میں مظاہرے جاری، سکیورٹی فورسز کی فائرنگ

شام میں حکومت مخالف سینکڑوں مظاہرین نے گزشتہ رات حمص نامی شہرکے کلاک اسکوائرپرقبضہ جما لیا۔ خبررساں ادارے روئٹرز نےعینی شاہدین کا حوالہ دیتے ہوئے بتایا ہے کہ ملکی سکیورٹی فورسزنے مظاہرین کومنتشر کرنےکے لیے فائرنگ بھی کی۔

default

حمص میں مظاہرین کے ساتھ شامل انسانی حقوق کے ایک کارکن نے روئٹرز کو بتایا کہ رات گئے جب مظاہرین نے کلاک اسکوائر پر قبضہ کرنے کے لیے پیش قدمی شروع کی تو سکیورٹی فورسز نے فائرنگ کے ساتھ ساتھ طاقت کا استعمال کرتے ہوئے آنسو گیس کے شیل بھی فائر کیے۔

اطلاعات کے مطابق فائرنگ سے قبل پولیس نے لاؤڈ اسپیکروں پر مظاہرین سے کہا کہ وہ یہ اسکوائر ‌خالی کر دیں۔ تاہم صدر بشار الاسد کے خلاف مظاہرے کے لیے جمع ہونے والے ان مظاہریں نےعہد کیا ہے کہ جب تک ان کے مطالبات تسلیم نہیں کیے جاتے، وہ وہاں سے نہیں ہٹیں گے۔

اس سے قبل وزارت داخلہ کی طرف سے سرکاری ٹیلی وژن پر نشر ہونے والے ایک پیغام میں شام میں نظر آنے والی تشدد کی لہر کا ذمہ دار سلفی تحریک کے مسلح حامیوں کو قرار دیا گیا اور کہا گیا یہ ’شر پسند عناصر عوام کو ہراساں‘ کر رہے ہیں۔

Syrien Banyas

مظاہرین نے فوری طور پر ایمرجنسی اٹھائے جانے اور عملی سیاسی اصلاحات کے حکومتی اعلان کا مطالبہ کیا ہے

شامی صدر بشار الاسد اگرچہ گزشتہ ہفتہ کے روز یہ کہہ چکے ہیں کہ وہ آئندہ ہفتہ تک سیاسی اصلاحات کا اعلان کر دیں گے تاہم مظاہرین نے فوری طور پر ایمرجنسی اٹھائے جانے اور عملی سیاسی اصلاحات کے حکومتی اعلان کا مطالبہ کیا ہے۔ شام میں انسانی حقوق کے سرکردہ کارکنوں کے مطابق وہاں مظاہرے شروع ہونے کے بعد سے اب تک کم ازکم دو سو افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔

بشار الاسد کی حکومت نے ذرائع ابلاغ پر پابندی عائد کر دی ہے کہ وہ ان مظاہروں کو رپورٹ نہ کریں جبکہ کئی غیر ملکی میڈیا اداروں سے تعلق رکھنے والے بیشتر افراد کو بھی گرفتار یا ملک بدر کر دیا گیا ہے۔ اطلاعات کے مطابق اتوار کو آٹھ افراد گولی لگنے سے ہلاک ہوئے تھے۔ بتایا گیا ہے کہ یہ ’افراد مظاہرہ کر رہے تھے کہ فوج نے فائرنگ شروع‘ کر دی تھی۔

بشار الاسد کی بعث پارٹی کے خلاف مظاہرے ایک ماہ قبل شروع ہوئے تھے۔ جنوبی شہر درعا سے شروع ہونے والے یہ مظاہرے دیکھتے ہی دیکھتے ملک بھر میں پھیل گئے۔ دمشق حکومت کے مطابق ایک ریاست کے طور پر شام ایک ’غیر ملکی سازش‘ کی لپیٹ میں آیا ہوا ہے۔

رپورٹ: عاطف بلوچ

ادارت: مقبول ملک

DW.COM