1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

شام میں فضائی حملے، 35 عام شہری ہلاک

شام میں جمعرات کی شام کیے گئے فضائی حملوں میں کم از کم 35 عام شہری ہلاک ہو گئے ہیں۔ مشرقی شامی علاقے دیر الزور کے قریب المیادن میں یہ حملے اسلامک اسٹیٹ کے جہادیوں کے خلاف کیے گیے۔

شامی تنازعے پر نگاہ رکھنے والی تنظیم سیریئن آبزرویٹری فار ہیومن رائٹس کے مطابق المیادان میں ہونے والی اس فضائی کارروائی میں شدت پسند تنظیم اسلامک اسٹیٹ کے جہادیوں کے اہل خانہ بھی ہلاک ہوئے ہیں۔

شدت پسند تنظیم اسلامک اسٹیٹ کے خلاف برسرپیکار امریکی قیادت میں بین الاقوامی اتحاد کے ایک ترجمان نے کہا ہے کہ 25 اور 26 مئی کو المیادن کے علاقے میں فضائی حملے کیے گئے، جن کے نتائج کا تجزیہ کیا جا رہا ہے۔

Syrien Belagerung Stadt Douma (DW/F. Abdullah)

شام میں سن 2011 سے مسلح تنازعہ جاری ہے

المیادن میں دو روز تک کی جانے والی بمباری میں قریب 50 افراد ہلاک ہوئے ہیں، جن میں عام شہری بھی شامل ہیں۔ سیریئن آبزرویٹری نے عینی شاہدین کے حوالے سے بتایا ہے کہ ہوائی جہاز کچھ دیر تک علاقے کی فضا میں چکر لگاتے رہے اور اس کے بعد میزائل فائر کیے۔ بتایا گیا ہے کہ اس حملے میں دو عمارتوں کو نشانہ بنایا گیا، جن میں سے ایک چار منزلہ عمارت تھے، جہاں اسلامک اسٹیٹ کے شامی اور مراکشی جہادیوں کے اہل خانہ مقیم تھے۔

شدت پسند تنظیم اسلامک اسٹیٹ حالیہ کچھ عرصے میں شام اور عراق کے کئی علاقوں سے پسپائی پر مجبور ہوئی ہے اور مختلف علاقوں سے جہادی اب شام کے مشرقی علاقوں میں جمع ہو رہے ہیں۔

امریکی قیادت میں بین الاقوامی اتحاد کی جانب سے کہا گیا ہے کہ فضائی حملوں میں عام شہری ہلاکتوں سے اجتناب کی تمام تر کوشش کی جا رہی ہے اور اس حالیہ کارروائی کے حوالے سے سامنے آنے والی رپورٹوں کا تجزیہ بھی کیا جا رہا ہے۔

ملتے جلتے مندرجات