شام جانے والا روسی فوج کا طیارہ گر کر تباہ | حالات حاضرہ | DW | 25.12.2016
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

شام جانے والا روسی فوج کا طیارہ گر کر تباہ

روسی وزارت دفاع کے مطابق فوج کا’ ٹی یو 154‘ ساخت کا طیارہ حادثے کا شکار ہوا ہے۔ روسی خبر رساں ادارے نے بتایا کہ ایک امدادی ٹیم کو سوچی کے ساحلوں کے قریب تباہ شدہ طیارے کا ملبہ مل گیا ہے۔

روسی وزرات دفاع کے بیان میں بتایا گیا:’’ وزارت دفاع کے طیارے ٹی یو 154 کے ٹکڑے بحیرہ اسود پر پحاس سے ستر میٹر کی گہرائی سے سوچی کے ساحلوں کے قریب سے مل گئے ہیں۔‘‘ فوج کے اس جہاز پر کا اکانوے افراد سوار تھے، جن میں 83 مسافر اور عملے کے آٹھ افراد شامل ہیں۔

Russland Soldatenchor Alexandrow-Ensemble

الیگزانڈرف اینسیمبلے کور کو الاذقیہ میں پرفارم کرنا تھا

بتایا گیا ہے کہ اس طیارے نے آج اتوار کی صبح سوچی میں واقع آڈلر نامی ایک ہوائی اڈے سے اپنی پرواز کا آغاز کیا تھا اور جس کے  تھوڑی ہی دیر بعد یہ طیارہ ریڈار سے غائب ہو گیا۔

اس طیارے کی منزل شامی شہر الاذقیہ تھی۔ روسی خبر رساں ادارے طاس کے مطابق طیارے پر روسی فوج کے الیگزانڈرف اینسیمبلے کور، فوجی اہلکار ، کچھ موسیقار اور  نو صحافی سوار تھے۔  الیگزانڈرف اینسیمبلے معروف روسی فوجی بینڈ ہے۔ بتایا گیا ہے کہ اس بینڈ کو نئے سال کے موقع پر شامی شہر الاذقیہ میں منعقد کی جانے والی ایک تقریب میں اپنی کارکردگی کا مظاہرہ کرنا تھا۔ ذرائع نے بتایا ہے کہ ابھی تک کسی بھی مسافر کے بچ جلانے کے حوالے سے کوئی بھی خبر سامنے نہیں آئی ہے۔