1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

مہاجرین کا بحران

شامی مہاجرین فوری طور پر اپنے ملک واپس جائیں، لبنانی صدر

لبنان کے صدر مشیل عون نے کہا ہے کہ اُن کے ملک میں رہائش پذیر شامی تارکین وطن کو فوری طور پر اپنے ملک شام واپس چلے جانا چاہیے۔ خواہ یہ واپسی رضاکارانہ بنیادوں پر ہو یا نہیں۔

صدر عون نے  فرانس کے سرکاری دورے کے موقع پر کہا ہے کہ لبنان کے مہاجر کیمپوں میں رہنے والے شامی پناہ گزینوں کو امداد کے طور پر اقوام متحدہ کی جانب سے ملنے والی مالی معاونت کو بلا تاخیر اُن کے گھر واپس بھیجے جانے پر صرف کرنا چاہیے۔ فرانس کے الیزے پیلیس میں فرانسیسی صدر ایمانوئیل ماکروں کے ساتھ گفتگو کے دوران صدر عون نے اس حوالے سے زور دیتے ہوئے کہا،’’ ہم اُن کی رضاکارانہ واپسی کا انتظار نہیں کر سکتے۔‘‘

لبنانی صدر کا مزید کہنا تھا کہ شام کہ وہ بیشتر علاقے جہاں سے ہجرت کر کے یہ مہاجرین لبنان آئے تھے، اب محفوظ ہیں۔ تاہم فرانسیسی صدر نے اپنے ہم منصب کے موقف سے اختلاف کرتے ہوئے کہا کہ جب تک شام کے بحران کا سیاسی حل تلاش نہ کر لیا جائے، شامی مہاجرین کو مستقل طور پر وطن واپسی کے لیے نہیں کہا جا سکتا۔

یاد رہے کہ شام میں جاری طویل خانہ جنگی سے فرار حاصل کر کے قریب ایک ملین شامی مہاجرین نے پڑوسی ملک لبنان میں پناہ حاصل کر رکھی ہے۔ ان میں سے نصف تعداد بچوں کی ہے۔

DW.COM