1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

کھیل

سچن تندولکر: ایک سوویں سنچری سے پھر دور

آسٹریلیا اور بھارت کے درمیان باکسنگ ڈے ٹیسٹ میچ کے دوسرے دن بھارت کے ماسٹر بیٹسمین تندولکر ایک بار پھر سوویں سنچری بنانے میں ناکام رہے۔ وہ ٹیسٹ اور ایک روزہ میچوں میں 99 سینچریاں بنا چکے ہیں۔

default

سچن تندولکر

آسٹریلیا کے شہر میلبورن  میں بارڈر گواسکر ٹرافی کے پہلے ٹیسٹ کا دوسرا دن بھارتی شائقین کرکٹ کے لیے اداسی پیدا کر کے ختم ہو گیا کیونکہ تندولکر اپنی سوویں سینچری بنانے میں ایک مرتبہ پھر ناکام رہے۔ آسٹریلیا کی پہلی اننگز کے اسکور  333 کے جواب میں بھارت کی پہلی اننگز ابھی تک خاصی بہتر دکھائی دے رہی ہے۔ اس کے تین کھلاڑی 214 کے اسکور پر آؤٹ ہوئے ہیں۔   پہلے دن کا کھیل ختم  ہونے سے دو اوور قبل تندولکر آؤٹ ہو گئے تھے۔

ماسٹر بیٹسمین سچن تندولکر نے  وریندر سہواگ کے آؤٹ ہونے کے بعد میدان میں قدم رکھا۔ اس وقت آسٹریلوی تیز بالر تجربہ کار کھلاڑی راہول ڈراوڈ کو پریشان کیے ہوئے تھے۔ تندولکر نے کریز پر پہنچ کر آسٹریلوی بالروں کا ڈٹ کر مقابلہ کیا۔ وہ 98 گیندوں پر 73 رنز کے ساتھ کھیل رہے تھے کو ان کو بُری گھڑی نے آن لیا۔ میزبان ملک آسٹریلیا کے تیز بالر پیٹر سِڈل نے اپنے پندرہویں اوور کی تیسری گیند کیا پھینکی کہ بھارتی شائقین کے دھڑکتے دل تھم کر رہ گئے۔ سِڈل کی یہ گیند ماسٹر بیٹسمین کے بلے اور پیڈ کے درمیان  سے نکل کر وکٹوں کو جا لگی۔ اس سے قبل بھی وہ اپنی سوویں سینچری بنانے میں ناکام رہے تھے۔ یہ دوسرا موقع ہے کہ تندولکر سوویں سینچری کے حصول میں ستر  اور اسی اسکور کے بیچ آؤٹ ہوئے۔

Flash-Galerie Cricket Sachin Tendulkar

سچن تندولکر اپنی سوویں سینچری کے منتظر ہیں

تین آسٹریلوی  تیز بالروں بین ہلفن ہاؤس، جیمز پیٹین سن اور پیٹر سِڈل کی معیاری گیندوں نے بھارتی بیٹسمینوں کے بلے کے باہری کنارے کو بار بار چھوا ضرور لیکن کوئی بھی ایسی شارٹ کیچ کی شکل میں فیلڈر کی پہنچ میں نہ آئی۔  بھارتی اننگز کے پہلے اوور میں بھارت کے اوپننگ بلے باز وریندر سہواگ کاایک کیچ کیپر بریڈ ہیڈین کے جانب گیا ضرور لیکن وہ اسے سنبھال نہیں سکے اور کیچ چھوڑ دیا۔ سہواگ کے دو سے زائد کیچ چھوڑے گئے۔ اس اننگز میں سہواگ نے ٹیسٹ کرکٹ میں آٹھ ہزار رنز بھی مکمل کیے۔ میچ کے دوسرے دن سہواگ اور لمبی قامت کے نئے  آسٹریلوی تیز بالر جیمز پیٹین سن کے درمیان گرما گرمی بھی دیکھنے میں آئی۔ جنوبی افریقی امپائر  ماریاس ایراسمس نے دونوں کھلاڑیوں کو سمجھا بجھا کر دور کیا۔

بھارت کی جانب سے تجربہ کار بیٹسمین راہول ڈراوڈ کریز پر چار گھنٹے سے زائد وقت سے موجود ہیں۔ وہ 185 گیندوں کا بھی سامنا کر چکے ہیں لیکن بین ہلفن ہاؤس، جیمز پیٹین سن اور پیٹر سِڈل کی معیاری گیند بازی کے سامنے’ بس‘ ڈٹے ہوئے ہیں۔ وہ 68 کے اسکور پر ناٹ آؤٹ ہیں۔

رپورٹ:  عابد حسین

ادارت:  عاطف بلوچ

DW.COM