1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

کھیل

سپاٹ فکسنگ معاملہ، ’شاہد آفریدی کی معذرت‘

پاکستانی کرکٹ ٹیم کے کپتان شاہد آفریدی نے ہفتہ کو کارڈیف میں نیوز کانفرنس کے دوران کہا کہ وہ سپاٹ فکسنگ کے معاملے پر ٹیم کی جانب سے معذرت خواہ ہیں اور کھلاڑیوں کو اس سلسلے میں بات چیت سے گریز کا مشورہ دیا گیا ہے۔

default

شاہد آفریدی

پاکستانی ٹیسٹ کپتان سلمان بٹ اور فاسٹ بولروں محمد عامر اور محمد آصف کو انٹرنیشنل کرکٹ کونسل نے انسداد بدعنوانی کے قواعد کی خلاف ورزی کے الزامات پر عبوری طور پر معطل کرنے کے احکامات جاری کئے تھے۔ ان کھلاڑیوں کے حوالے سے حتمی فیصلہ تفتیشی رپورٹ کے بعد کیا جائے گا۔ اس کے بعد پاکستان کرکٹ بورڈ نے ان تینوں کھلاڑیوں کے نام اپنے ون ڈے اور ٹوئنٹی 20 سکواڈ سے خارج کرنے کا اعلان کیا تھا۔ ان کھلاڑیوں پر الزامات ہیں کہ انہوں نے بھاری معاوضے کے عوض پاکستان اور انگلینڈ کے درمیان کھیلی جانے والی ٹیسٹ سیریز کے آخری میچ میں ’نو بالز‘ کرائیں۔

Pakistan Cricket Manipulation

پاکستان کے تین کھلاڑیوں کو سپاٹ فکسنگ کے الزامات کا سامنا ہے

شاہد آفریدی نے نیوز کانفرنس کے دوران کہا کہ ان کے خیال میں ان کھلاڑیوں کا ٹیم میں شامل نہ کیا جانا یقینی طور پر ایک بہت بری خبر ہے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ وہ ان کھلاڑیوں کی جانب سے کرکٹ سے محبت کرنے والے شائقین اور اقوام سے معذرت طلب کرتے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا، ’یہ دو ٹوئنٹی 20 اور پانچ ایک روزہ میچ بحثیت کپتان میرے لئے ایک بڑا چیلنج ہیں۔ کوچ وقار یونس اور میں نے تمام لڑکوں کو کہا ہے کہ اس (سپاٹ فکسنگ) کے بارے میں کوئی بات نہ کریں۔ یہ ہمارا مسئلہ نہیں ہے اور ہم یہاں صرف کرکٹ کھیلنے آئے ہیں۔‘

انہوں نے کہا کہ پاکستانی ٹیم میں شامل تمام کھلاڑی جیت کے لئے پرعزم ہیں اور ٹیم کے کپتان کے طور پر وہ بھی یہی چاہتے ہیں۔

Pakistan Cricket Manipulation Mohammad Asif

محمد آصف

برطانوی آخبار نیوز آف دی ورلڈ نے گزشتہ اتوار کو الزام عائد کیا تھا کہ اخبار نے مظہر مجید نامی ایک شخص جو متعدد پاکستانی کھلاڑیوں کا ایجنٹ بھی ہے، کو ڈیڑھ لاکھ پاؤنڈ دیے تھے تاکہ وہ کھیل میں کرائی جانے والی نو بالز کے حوالے سے پہلے سے معلومات فراہم کر دے جو سٹہ کھیلنے میں استعمال کی جا سکیں۔

آفریدی نے نیوز کانفرنس میں کہا کہ انہوں نے مظہر مجید کو ٹیم کے چند کھلاڑیوں کے ساتھ آسٹریلیا اور ویسٹ انڈیز کے دوروں میں دیکھا ہے، تاہم وہ اس کے بارے میں زیادہ معلومات نہیں رکھتے۔

ہفت روزہ نیوز آف دی ورلڈ ہر اتوار کو شائع ہوتا ہے۔ شاہد آفریدی نے اپنے بیان میں کہا کہ انہوں نے تمام پاکستانی کھلاڑیوں کو منع کر دیا ہے کہ وہ آج شائع ہونے والا شمارہ نہ پڑھیں۔ انہوں نے کہا، ’میں جانتا ہوں، پاکستان میں لوگوں کو اس خبر سے نہایت دکھ پہنچا ہے۔ ان کے لئے یہ معاملہ یقینی طور پر افسوس ناک ہے، مگر ہم سب کرکٹ سے محبت کرتے ہیں۔‘

دوسری جانب ہفت روزہ نیوز آف دی ورلڈ نے ہفتہ کو جاری کردہ اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ وہ میچ فکسنگ معاملے کے حوالے سے مزید کچھ حقائق اتوار کو شائع کریں گے۔ بیان میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ پاکستانی ٹیسٹ ٹیم کے اوپننگ بیٹسمین یاسر حمید کا کہنا ہے کہ ان کی ٹیم کے متعدد کھلاڑی تقریبا ہر میچ ہی میں ’فکسنگ‘ کرتے رہے ہیں۔

رپورٹ : عاطف توقیر

ادارت : ندیم گِل

DW.COM

ویب لنکس