1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

سائنس اور ماحول

سٹیم سیل طریقہء علاج ’نقصان دہ‘ ہے: سائنس دان

سائنسدانوں نے خبردار کیا ہے کہ ایک مریض میں سٹیم سیل طریقہء علاج کے خطرناک نتائج دیکھے گئے ہیں۔ یہ شخص گردوں کی بیماری کا شکار تھا اور اس کے جسم میں سٹیم سیلز داخل کئے گئے تو اس کے ٹشوز کو شدید نقصان پہنچا۔

default

کینیڈا اور تھائی لینڈ کے سائنسدانوں نے ’جرنل آف امیریکن سوسائٹی آف نیفرولوجی‘ میں شائع ہونے والی اپنی ایک تحقیقی رپورٹ میں کہا ہے کہ سٹیم سیل طریقہء علاج کے انسانی جسم پر خطرناک نتائج دیکھے گئے ہیں۔ ان سائنسدانوں کے مطابق گردوں کی تکلیف میں مبتلا ایک مریض کے جسم میں سٹیم سیلز داخل کئے گئے، جس کے ردعمل میں جسمانی بافتوں کو شدید نقصان پہنچا اور پھر انفیکشن کی وجہ سے اس شخص کی موت واقع ہو گئی۔

Wissenschaftler nimmt gefrorene Stammzellen aus einem Kuehlbehaelter

ماہرین کے مطابق ابھی تحقیق اور علاج کے درمیان ایک واضح فاصلہ موجود ہے

یہ رپورٹ بنکاک کی ایک یونیورسٹی اور یونیورسٹی اور ٹورونٹو کی مشترکہ تحقیق پر مبنی ہے۔ محققین نے ایک مریض کے گردے پر اس طریقہء علاج کے دوران گردے پر پڑنے والے اثرات کا تجزیہ کیا۔ سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ سٹیم سیل داخل کرنے سے مریض کو کسی قسم کا کوئی فائدہ نہیں ہوا بلکہ جس جگہ سے جسم میں سٹیم سیلز داخل کئے گئے، وہاں بافتوں کو شدید نقصان پہنچا۔ اس مریض کا ایک نجی کلینک میں علاج کیا جا رہا تھا۔

Stammzellenforschung

سٹیم سیل ٹیکنالوجی میں تیزی سے تحقیق جاری ہے

بنکاک یونیورسٹی سے وابستہ اس تحقیقی ٹیم کی سربراہ ڈاکٹر دُوانگ بانجاساک نے کہا کہ اس سے قبل کسی مریض پر سٹیم سیل طریقہء علاج کے ایسے اثرات کبھی بھی نہیں دیکھے گئے ہیں۔ انہوں نے اس تحقیقی رپورٹ میں خبردار کیا کہ علاج کے اس طریقے پر ابھی مزید کام کی ضرورت ہے اور اس کے بعد ہی اسے مریضوں پر آزمایا جانا چاہیے۔ سائنسدانوں کا خیال ہے کہ سٹیم سیل طریقہء علاج کے استعمال کے وقت شدید احتیاطی تدابیر کی ضرورت ہے۔ ماہرین کے مطابق سٹیم سیل تحقیق اور علاج کے درمیان ابھی خاصہ فاصلہ ہے۔

بیشتر سائنسدانوں کو تاہم امید ہے کہ سٹیم سیلز بہت سی بیماریوں کے علاج میں اہم کردار ادا کر سکتے ہیں۔ محققین کہتے ہیں کہ اب تک کی گئی تحقیق سے واضح ہوتا ہے کہ بالغ انسانوں کی ہڈیوں کے گودے سے حاصل کئے جانے والےسیلز، سٹیم سیل تکنیک کے ذریعے گردوں سمیت دیگر انسانی اعضاء کے خلیوں میں تبدیل کئے جا سکتے ہیں۔

پہلے جانوروں کے جسموں پر کی گئی ایک تحقیق کے بعد کہا گیا تھاکہ جانوروں کے گردوں سمیت جسم کے دیگر اعضاء میں سٹیم سیل داخل کرنے سے جسمانی بافتوں کو خطرات لاحق نہیں ہوتے۔

رپورٹ: عاطف توقیر/خبر رساں ادارے

ادارت: گوہر نذیر گیلانی

DW.COM