1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

سویڈش کمپنی سکانیا اب پاکستانی مارکیٹ میں 

ٹرک اور بسیں بنانے والی سویڈن کی کمپنی سکانیا نے اعلان کیا ہے کہ اس کی جانب سے پاکستان میں پریمیم ٹرک، ٹریکٹر اور بسیں متعارف کرائی جائيں گی۔ اس کمپنی  نے یوسف دیوان نامی کمپنی کو پاکستان میں اپنا ڈسٹریبیوٹر مقرر کیا ہے۔

سکانيا کی ویب سائٹ پر جاری کردہ معلومات کے مطابق يہ کمپنی کافی عرصے سے پاکستانی منڈی میں داخل ہونے کا ارادہ رکھتی تھی۔ سکانیا نے اب پاکستان میں یوسف دیوان ٹرک اینڈ بس کمپنی کو اپنے ٹرک اور بسیں فروخت کرنے کے لیے ڈسٹری بیوٹر مقرر کر دیا ہے۔

سکانیا کمپنی کے پاکستان ميں کاروبار کے مینیجر ٹوبیاز ایکسڈیٹ کا کہنا ہے، ’’ہمیں امید ہے کہ ہم پاکستان میں اعلیٰ معیار کی گاڑياں فروخت کر سکیں گے۔ پاکستان میں ایسے گاہک ہیں جو ایک شہر سے دوسرے شہر سفر کے لیے بہترین اور آرام دہ بسوں میں سفر کرنا چاہتے ہیں۔‘‘

کمپنی کی ویب سائٹ کے مطابق پاک چین اقتصادی راہ داری کی وجہ سے ان کے ٹرکوں اور بسوں کی مانگ میں اضافہ ہو گا۔ سی پیک منصوبے کے ذریعے وسطی چین کو پاکستان کے شہر گوادر کی بندرگاہ سے ملایا جا رہا ہے۔ اس کے علاوہ کراچی سے لاہور تک 1100 کلومیٹر  طویل موٹر وے بھی تعمیر کی جا رہی ہے۔ پاکستان کے مختلف علاقوں سے چین کی سرحد تک سڑکوں کی مرمت بھی کی جاری ہے۔ سکانیا کی ویب سائٹ کے مطابق،’’ ان راستوں پر کارگر اور بہتر ٹرکوں کی ضرورت ہو گی۔ سکانیا کے پاس کم تیل استعمال کرنے والے اور اعلیٰ کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے ٹرک ہیں۔‘‘

Pakistan | China und Pakistan starten ihre Handelsroute (picture-alliance/AA)

پاک چین اقتصادی راہ داری کی وجہ سے سکانیا کے ٹرکوں اور بسوں کی مانگ میں اضافہ ہو گا

واضح رہے کہ گوادر بندرگاہ کے باعث چین سے بحری جہازوں کے ذریعے سامان کی ترسیل میں تین ہفتے کی کمی آ سکتی ہے۔ اس کے علاوہ مشرق وسطیٰ سے بھی سامان کی ترسیل مقابلتاً جلد پاکستان پہنچ سکتی ہے۔

سکانیا پاکستان کے کان کنی کے شعبے میں بھی اپنے ٹرک فروخت کرنا چاہتی ہے۔ کمپنی کی ویب سائٹ کے مطابق یہ بہت کم لوگ جانتے ہیں کہ پاکستان کے پاس دنیا کے پانچویں سب سے زیادہ سونے کے ذخائر ہیں۔ اس یورپی کمپنی کے ڈسٹریبیوٹر یوسف دیوان ٹرک اینڈ بس کمپنی کا تعلق دیوان مشتاق گروپ سے ہے۔ اس گروپ نے پاکستان میں ٹیکسٹائل، سیمنٹ اور چینی کی صنعت میں سرمایہ کاری کی ہوئی ہے۔ یہ گروپ پاکستان میں جرمن کار ساز ادارے بی ایم ڈبلیو کی گاڑیوں کو برآمد کرتا ہے اور کورین گاڑیوں کو اسمبل بھی کرتا ہے۔

DW.COM