1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

سوڈان میں الیکشن: ووٹنگ کے عرصے میں دو دن کی توسیع

سابق امریکی صدر جمی کارٹر نے کہا ہے کہ سوڈان میں جاری انتخابات کے سلسلے میں کچھ مسائل ہیں۔ تاہم سوڈانی حکام ان مسائل کو حل کرنے کے لئے کوشاں ہیں۔ کارٹر نے ووٹنگ کے عرصے میں توسیع کے حکومتی فیصلے کو بھی سراہا ہے۔

default

سوڈانی حکومت کی جانب سے ووٹنگ کے لئے دیے گئے وقت میں توسیع کا فیصلہ انتخابی عمل سے متعلق ملنے والی شکایات کے بعد کیا گیا ہے۔ سوڈان میں جاری اس انتخابی عمل کو شیڈول کے مطابق تو آج منگل کے روز ختم ہوجانا تھا، تاہم اب یہ جمعرات 15 اپریل کو اختتام پذیر ہوگا، تاکہ تمام ووٹروں کو رائے دہی میں شرکت کے لئے مناسب وقت مل سکے۔

Sudan Wahlen Omar al-Bashir

سابق امریکی صدر جمی کارٹر سوڈانی صدر عمر البشیر کے ساتھ۔

سابق امریکی صدر جمی کارٹر جنوبی سوڈان کے دارالحکومت جُوبا میں صحافیوں سے گفتگو کر رہے تھے، جہاں وہ انتخابی عمل پر نظر رکھنے والی اپنی تنظیم کارٹر سینٹر کے حوالے سے موجود ہیں اور انتخابی مبصرین کے ایک 70 رکنی گروپ کی سربراہی کر رہے ہیں۔ جمی کارٹر نے اس موقع پر تصدیق کی کہ تین روز سے جاری اس انتخابی عمل میں انتخابی سامان کی ترسیل کے حوالے سے شکایات تو موصول ہوئی ہیں، لیکن ابھی تک انتخابی بدعنوانی کا کوئی واقعہ سامنے نہیں آیا۔

ووٹنگ کے لئے دو اضافی دن دینے کے حکومتی فیصلے سے قبل سوڈانی سیاسی رہنماؤں نے شکایت کی تھی کہ انتخابی سامان کی عدم دستیابی کی وجہ سے لاکھوں ووٹر اپنا حق رائے دہی استعمال کرنے سے قاصر ہیں۔ انتخابات کے ابتدائی اعدادوشمار کے مطابق ووٹ ڈالنے کی شرح دس فیصد سے بھی کم تھی۔

سوڈان میں جاری انتخابات گزشتہ 25 برسوں کے دوران جماعتی بنیادوں پر ہونے والے پہلے انتخابات ہیں۔ یہ انتخابات سال 2005ء میں ہونے والے اس معاہدے کا حصہ ہیں جو ملک میں 21 سال سے جاری خانہ جنگی کو ختم کرنے کے لئے طے کیا گیا تھا۔

رپورٹ : افسر اعوان

ادارت : مقبول ملک

DW.COM