1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

معاشرہ

سوڈانی صدر عمر البشیر کے خلاف جنگی جرائم کا مقدمہ

انٹرنیشنل کرمنل کورٹ میں سوڈان کے صدر عمر البشیرکے خلاف نسل کشی اور دارفور میں جنگی جرائم کا مرتکب ہونے کے الزام میں مقدمہ دائر کردیا گیا ہے۔

default

سوڈانی صدر عمر حسن البشیر

ہالینڈ کے شہر دی ہیگ میں واقع انٹرنیشنل کرمنل کورٹ میں اثتغاثہ لوئس موغینو اکامپو نے جنگی جرائم کے ارتکاب کے الزام میںسوڈانی صدر عمر البشیر کے خلاف یہ الزامات عائد کیے۔ تین افریقی قومیتوں سے تعلق رکھنے والے افراد کا قتلِ عام۔ ان قومیتوں کے افراد کوزہنی ایزادینا اور ایسے حالات پیدا کرنا جن سے تباہی و بربادی پھیلے۔ قتل، تشدّداور آبرو ریزی، اور بڑی تعداد میں لوگوں کو زبردستی نقل مکانی پر مجبور کرنا۔ شہری آبادی پر مسلح حملے کروانا اور لوٹ مار کرنا۔


تین ججوں پر مشتمل انٹرنیشنل کرمنل کورٹ کا پینل اب یہ طے کرے گا کہ عمر البشیر کی گرفتاری کے وارنٹ جاری کیے جائیں یا نہیں۔ یہ پہلا موقع ہے کہ انٹرنیشنل کرمنل کورٹ کسی حاضر سربراہِ مملکت کے خلاف مقدمے کی سماعت کر رہی ہے۔


اقوامِ متحدہ کے مطابق سن دو ہزار تین سے جاری دارفور تنازعے میں کم از کم تین لاکھ افراد جاں بہ حق جب کہ بیس لاکھ کے قریب افراد نقل مکانی پر مجبور ہو چکے ہیں۔ سوڈانی حکومت ہلاکتوں کا الزام عرب عسکری تنظیموں پر عائد کرتی ہے۔ اقوامِ متحدہ اور افریقی یونین پر مشتمل امن دستے کے تقریباً نو ہزار اہلکار دارفور میں قیامِ امن کے لیے تعینات ہیں۔

Kindersoldat in Uganda

دارفور تنازعے میں تقریباً تین لاکھ افراد ہلک ہو چکے ہیں


سوڈانی حکومت نے کہا ہے کہ عمر البشیر کے خلاف انٹرنیشنل کرمنل کورٹ میں کوئی بھی مقدمہ بے معنی ہوگا۔ سوڈانی حکومت کا کہنا ہے کہ وہ انٹرنیشنل کرمنل کورٹ کو تسلیم نہیں کرتی ہے اور سوڈان کا صدر ہو یا کوئی عام شہری، آئی سی سی کے مقدمے یا فیصلے کی سوڈان کے لیے کوئی اہمیت نہیں ہے۔ گزشتہ برس سوڈانی حکومت نے جرم ثابت ہونے کے با وجود اپنے ایک اور عسکری رہنما کو آئی سی سی کے حوالے کرنے سے انکار کردیا تھا۔


سوڈانی حکومت نے لوئس موغینو اکامپو کو مجرم قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ صدر عمر البشیر کے خلاف کوئی بھی کارروائی سوڈان تنازعے کے حوالے سے جاری امن کاوشوں کے لیے نقصان دہ ثابت ہوگی۔ سوڈان لبریشن آرمی کے ایک اہلکار نے کہا ہے کہ وہ عمر البشیر کے خلاف آئی سی سی کے فیصلے کو خوش آمدید کہیں گے۔


اقوامِ متحدہ نے دارفور میں اپنے اہلکاروں کی حالیہ ہلاکتوں کی شدید مذمت کی ہے اور کہا ہے کہ اقوامِ متحدہ کے اہلکاروں کی حفاظت سوڈانی حکومت کی زمہ داری ہے۔ امریکہ نے سوڈان تنازعے کے تمام فریقین سے پر امن رہنے کی اپیل کی ہے او رکہا ہے کہ امریکی حکومت صورتِ حال کا جائزہ لے رہی ہے۔