1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

معاشرہ

سوشل میڈیا کا استعمال، دلہن کو شادی کے دو گھنٹے بعد طلاق

سعودی عرب کے ایک شہری نے اپنے شادی کے صرف دو گھنٹے بعد ہی اپنی نئی نویلی دلہن کو طلاق دے دی۔ دلہن نے شادی کی تصاویر سوشل میڈیا کی ایک ایپ سنیپ چیٹ پر پوسٹ کر دی تھیں۔

سعودی عرب میں ایک شخص نے اپنی دلہن کو شادی کے صرف دو گھنٹے بعد اُس وقت طلاق دے دی، جب اسے یہ پتا چلا کہ اس کی بیوی نے شادی کی تصاویر اپنی سہیلیوں کے ساتھ شیئر کی ہیں۔ دلہن کے بھائی کا نام ظاہر  نہ کرنے کی شرط پر سعودی عرب کے عکاظ نامی اخبار سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا، ’’ شادی کے معاہدے میں یہ شرط رکھی گئی تھی کہ دلہن سوشل میڈیا کا استعمال نہیں کرے گی، سنیپ چیٹ، انسٹاگرام اور ٹوئیٹر وغیرہ کے استعمال پر پابندی کی شرط تھی اور یہ بھی لکھا تھا کہ شادی کی تصاویر شیئر نہیں کی جائیں گی۔‘‘

دلہن کے بھائی کا اس حوالے سے مزید کہنا تھا، ’’بدقسمتی سے میری بہن نے شادی کے معاہدے کی پاسداری نہیں کی اور شادی کی تصاویر اپنی سہیلیوں کے ساتھ سوشل میڈیا پر شیئر کیں۔‘‘

دلہن کے خاندان کا کہنا تھا کہ خاوند انتہائی سخت مزاج ہے۔ دوسری جانب دلہے کے خاندان والوں کا کہنا ہے کہ دلہے کو طلاق دینے کا حق حاصل تھا۔

سعودی قانون کے مطابق کوئی بھی خاوند کسی بھی وقت بغیر کسی قانونی وجہ کے بیوی کو طلاق دے سکتا ہے اور اس کا اطلاق فوری طور پر ہوگا۔ دوسری جانب خواتین کو طلاق کے لیے شوہر کی رضامندی کی ضرورت ہوتی ہے اور اگر ایسا نہ ہو تو اسے عدالت سے رجوع کرنا پڑتا ہے۔

بچوں کی ایک خاص عمر کے بعد خاتون کو اپنے بچے بھی اپنے پاس رکھنے کا حق نہیں ملتا۔