1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

معاشرہ

سفاکانہ ویڈیوز: کشمیریوں کے غم و غصے میں اضافے کا باعث

ایک ویڈیو میں ایک کشمیری نوجوان کو فوج کی جیپ کے سامنے والے حصے پر بندھے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے جبکہ ایک اور ویڈیو میں فوجی زمین پر گرائے گئے ایک کشمیری نوجوان پر بے دردی سے لاٹھیاں برسا رہے ہیں۔

خبر رساں ادرے ایسوی ایٹڈ پریس کے ایک تجزیے کے مطابق انسانی حقوق کے گروپ طویل عرصے سے بھارتی سکیورٹی فورسز کو بھارتی زیر انتظام کشمیر میں منظم انداز میں کشمیریوں کے ساتھ بد سلوکی اور تشدد کے علاوہ غیر قانونی گرفتاریوں کا ذمہ دار ٹھہراتے آ رہے ہیں۔ بھارتی حکومت کی طرف سے یہ تسلیم تو کیا جاتا ہے کہ کشمیر میں مسئلہ موجود ہے تاہم وہ یہ تسلیم کرنے کو تیار نہیں ہے کہ ایسے اقدامات کا مقصد کشمیریوں کو خوفزدہ کرنے کی منظم منصوبہ بندی کا حصہ ہے۔

کشمیری گزشتہ کئی برسوں سے بھارتی فورسز کے مبینہ ظلم و زیادتیوں پر مبنی ویڈیوز سوشل میڈیا پر جاری کرتے رہے ہیں تاہم حالیہ کچھ عرصے کے دوران سوشل میڈیا پر نظر آنے والی ویڈیوز کشمیریوں میں کافی زیادہ غم وغصے کا باعث بنی ہیں خاص طور پر ایک ایسے وقت پر جب نو اپریل کو مقامی انتخابات کے موقع پر بھارت مخالف مظاہروں کے دوران بھارتی سکیورٹی فورسز کی طرف سے مظاہرین کو کافی زیادہ تشدد کا نشانہ بنایا گیا۔

سوشل میڈیا پر گردش کرنے والی ویڈیوز میں سے ایک میں ایک بھارتی فوجی کی طرف سے محض چند میٹر کے فاصلے سے ایک ایسے ٹین ایجر نوجوان کو گولی کا نشانہ بناتے دیکھا جا سکتا ہے جو مظاہرے کے دوران سکیورٹی فورسز پر پتھر پھینک رہا تھا۔

ایک اور ویڈیو میں ایک فوجی ویگن میں بیٹھے کشمیری نوجوانوں کو بھارتی فوج شدید تشدد کا نشانہ بنا رہے ہیں اور پاکستان مخالف نعرے لگانے پر مجبور کر رہے ہیں جبکہ اس دوران ایک فوجی ان نوجوانوں کو لاٹھی اور تھپڑوں سے نشانہ بناتے دیکھا جا سکتا ہے۔ اسی ویڈیو میں کیمرہ ایسے نوجوانوں کی طرف بھی جاتا ہے جن کے چہرے لہو لہان ہیں اور وہ رو رہے ہیں۔ ایسی ہی ایک اور ویڈیو میں بھارتی فوجی ایک کشمیری نوجوان کو سڑک پر لٹا کر اُس کی پشت پر ٹھڈے اور لاٹھیاں برسا رہے ہیں۔

جو ویڈیو اس حوالے سے سب سے زیادہ غم وغصے کا باعث بنی اور جو بین الاقوامی سطح پر خبروں کا حصہ بنی اُس میں فاروق احمد ڈار نامی ایک کشمیری نوجوان کو بھارتی فوج کی ایک جیپ کے بونٹ پر بندھا ہوا دکھایا گیا ہے۔ ویڈیو کے بیک گراؤنڈ میں ہندی زبان میں یہ کہتے سنا جا سکتا ہے کہ پتھر پھینکنے والے ہر شخص کا یہی حال کیا جائے گا۔

Indien Kaschmir Poilzeigewalt Srinagar (Getty Images/AFP/R. Conway)

نو اپریل کو بھارتی انتظام کشمیر میں مقامی انتخابات کے موقع پر بھارت مخالف مظاہروں کے دوران بھارتی سکیورٹی فورسز کی طرف سے مظاہرین کو کافی زیادہ تشدد کا نشانہ بنایا گیا

فاروق احمد ڈار نے خبر رساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس کو بتایا کہ جب بھارتی فوجیوں نے اسے جیپ کے بونٹ پر باندھ کر گشت کیا تو وہ کہہ رہے تھے، ’’ہم تمھیں گولی مار دیں گے۔ وہ لوگ میرے سر پر پتھر پھینک رہے تھے۔‘‘ ڈار نے مزید بتایا کہ فوجیوں نے اسے کچھ بھی بولنے سے منع کر دیا تھا۔ ایک گاؤں میں ایک بزرگ شخص نے فوجیوں کی منت سماجت کی کہ وہ اُسے چھوڑ دیں مگر انہوں نے ایک نہ مانی۔

اس واقعے کے بعد بھارتی پولیس نے نامعلوم فوجی کے خلاف ایک مجرمانہ کیس رجسٹر کیا۔ جبکہ بھارتی فوج کا کہنا ہے کہ اس معاملے کی فوج کی جانب سے داخلی طور پر چھان بین کی جا رہی ہے۔