1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

سعودی ولی عہد کے لیے سی آئی اے کا تمغہٴ حسنِ کارکردگی

سعودی عرب میں ولی عہد شہزادہ محمد بن نائف کو امریکی خفیہ ادارے سی آئی اے نے اُن کی انسداد دہشت گردی کے سلسلے میں کی جانے والی کاوشوں کے اعتراف کے طور پر ادارے کے اعلیٰ تمغے سے نوازا ہے۔

Mohammed ibn Naif - Innenminister von Saudi Arabien (Wikipedia/Gemeinfrei)

محمد بن نائف نے عسکریت پسند گروہ القاعدہ کے خلاف ایک آپریشن کی نگرانی بھی کی تھی

سعودی عرب میں سرکاری خبر رساں ایجنسی ایس پی اے کی رپورٹ کے مطابق  سی آئی اے کے نئے سربراہ مائیک پومپیو نے جنوری میں عہدہ سنبھالنے کے بعد امریکی خفیہ ادارے کے ڈائریکٹر کے طور پر پہلا بیرونِ ملک دورہ سعودی عرب کا کیا، جہاں انہوں نے ولی عہد شہزادہ محمد بن نائف سے ملاقات کی۔

 ستاون سالہ شہزادہ محمد سن 2012 سے ملک کے وزیرِ داخلہ کی حیثیت سے خدمات انجام دے رہے ہیں اور انہیں انٹیلیجنس کے کام میں سالوں کا تجربہ حاصل ہے۔ شہزادہ محمد کو تشدد اور دہشت گردی کے خلاف اُن کی بڑے پیمانے پر کی گئی کاشوں  کی وجہ سے مغرب میں عزت کی نگاہ سے دیکھا جاتا ہے۔ شاہی خاندان کے ولی عہد اور ملکی وزیر داخلہ محمد بن نائف نے عسکریت پسند گروہ القاعدہ کے خلاف ایک آپریشن کی نگرانی بھی کی تھی۔

 القاعدہ نے سن 2003 اور سن 2007 کے درمیان سعودی عرب میں سیکورٹی اہلکاروں اور غیر ملکیوں کو دہشتگردانہ کارروائیوں میں ہلاک کیا تھا۔ سن 2009 میں محمد بن نائف پر القاعدہ کی جانب سے قاتلانہ حملہ کیا گیا تاہم اُنہیں معمولی چوٹیں آئیں۔

USA Mike Pompeo - Trumps Kabinett (picture-alliance/AP Photo/M. B. Ceneta)

 پومپیو نے محمد بن نائف کو انسدادِ دہشت گردی کے لیے کی جانے والی بہترین خدمات پر اُنہیں جارج ٹینِٹ میڈل سے نوازا

 پومپیو نے محمد بن نائف کو انسدادِ دہشت گردی کے لیے کی جانے والی بہترین خدمات پر اُنہیں جارج ٹینِٹ میڈل سے نوازا۔ جارج ٹینٹ سی آئی کے سب سے طویل عرصے تک سربراہ رہے تھے۔ اُنہوں نے اس خفیہ ادارے کے ڈائریکٹر کا منصب سن 1996 سے سن 2004 تک سنبھالے رکھا۔

 سعودی عرب کی سرکاری نیوز ایجنسی کے مطابق پومپیو اور شہزادہ نائف نے سیکیورٹی اُمور پر بھی بات چیت کی۔ بیس جنوری کو ڈونلڈ ٹرمپ کے اقتدار سنبھالنے کے بعد یہ ملاقات سعودی عرب اور واشنگٹن کے درمیان بہتر تعلقات کی تازہ ترین توثیق تھی۔ امریکا اور سعودی عرب کے درمیان کئی دہائیوں سے تعلقات قائم ہیں جن کی بنیاد سعودی تیل پر امریکی سیکورٹی کی فراہمی پر رکھی گئی ہے۔

DW.COM