سعودی خواتین پر اسٹیڈیم جانے کے دروازے کھل گئے | معاشرہ | DW | 08.01.2018
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

معاشرہ

سعودی خواتین پر اسٹیڈیم جانے کے دروازے کھل گئے

سعودی خواتین ملکی تاریخ میں پہلی بار رواں ماہ ہونے والے فٹ بال میچ کے مقابلے اسٹیڈیمز میں جا کر دیکھ سکیں گی۔ ریاض حکومت نے گزشتہ برس اعلان کیا تھا کہ سن دو ہزار اٹھارہ سے خواتین پر عائد اس پابندی کو ختم کر دیا جائے گا۔

سعودی حکومت کے زیرانتظام چلائے جانے والے انٹرنیشنل کمیونیکیشن سینٹر نے ایک بیان میں کہا ہے کہ سعودی خواتین جمعے کے روز سے شروع ہونے والے فٹ بال میچز  اسٹیڈیم میں جا کر دیکھ سکیں گی۔

سعودی وزارت اطلاعات کی جانب سے جاری ایک بیان میں بھی کہا گیا ہے کہ وہ پہلا میچ جو سعودی خواتین کو دیکھنے کی اجازت ہو گی، بارہ جنوری کو الحئی بمقابلہ الباطن فٹ بال کلب کے درمیان کھیلا جائے گا۔ اس سلسلے کا دوسرا میچ تیرہ جنوری جبکہ تیسرا اور آخری میچ اٹھارہ جنوری کو ہو گا۔

وہ اسٹیڈیم جہاں یہ مقابلے منعقد ہوں گے اُن میں سے کنگ فہد اسٹیڈیم دارالحکومت ریاض میں، دوسرا جدہ میں اور تیسرا دمام شہر میں ہے۔ گزشتہ برس اکتوبر میں سعودی اسپورٹس اتھارٹی نے اعلان کیا تھا کہ مذکورہ بالا تینوں اسٹیڈیم اب خواتین کے لحاظ سے بھی تیار کیے جائیں گے۔

سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے اپنے وژن 2030 کے تحت اعلان کر رکھا ہےکہ سعودی مملکت کا تشخص ایک اعتدال پسند ملک کا بنایا جائے گا۔

DW.COM

ملتے جلتے مندرجات