1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

سائنس اور ماحول

سری لنکا کے ساحلوں کے قریب گیس کے اولین ذخائر کی دریافت

جنوبی ایشیا کی ریاست سری لنکا کے ساحلوں کے قریب سمندری علاقے میں تیل اور قدرتی گیس کی تلاش کے دوران ماہرین کو پہلی مرتبہ قدرتی گیس کے ذخائر کی موجودگی کا پتہ چلا ہے۔

default

اس بات کا اعلان سری لنکا کے صدر مہیندا راجا پاکسے نے ابھی حال ہی میں کولمبو میں کیا۔ سری لنکا کے سمندری علاقے میں قدرتی گیس اور تیل کی تلاش کا یہ کام Cairn Lanka نامی کمپنی کی طرف سے کیا جا رہا ہے۔ کیرن لنکا توانائی کے شعبے میں خشکی اور سمندر کی تہہ میں کھدائی کرنے والا ایک ایسا صنعتی ادارہ ہے، جو مکمل طور پر کیرن انڈیا کی ملکیت ہے۔

سری لنکا کے صدر کے مطابق کیرن لنکا نے Mannar Basin کے علاقے میں سمندر کی تہہ میں پہلی مرتبہ کھدائی کی جو کوشش کی، وہ کامیاب رہی۔ اس پر سری لنکا کے حکام کے ساتھ رابطہ کر کے یہ باقاعدہ تصدیق کر دی گئی کہ اس علاقے میں قدرتی گیس کے اولین ذخائر دریافت کر لیے گئے ہیں۔

اس علاقے میں کیرن لنکا نے سمندر کی تہہ میں تیل اور گیس کی تلاش کے لیے کھدائی کا کام اسی سال اگست میں شروع کیا گیا تھا۔ کیرن لنکا کے ایک بیان کے مطابق قدرتی گیس کے یہ ذخائر سطح سمندر سے چار ہزار تین سو میٹر یا قریب چودہ ہزار فٹ کی گہرائی میں ملے ہیں۔

Gasfeld in Ostchinesisches Meer Streit China Japan

بحیرہ مشرقی چین میں گیس کی پیداوار کی چینی تنصیبات، سری لنکا بھی اسی انداز میں گیس کی پیداوار کا خواہش مند ہے

کیرن انڈیا نے اس بارے میں اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ گیس کے ان ذخائر کی دریافت کے بعد اب اس بات کا اندازہ لگایا جائے گا کہ آیا وہاں سے گیس نکالنا تجارتی اور پیداواری بنیادوں پر قابل عمل اور سود مند ثابت ہو سکتا ہے۔ تاہم اس کے لیے مزید کھدائی کی ضرورت ہو گی۔ سری لنکا اب تک اپنی تیل اور گیس کی تمام ضروریات درآمدی ذرائع سے پوری کرتا ہے۔

کیرن لنکا مکمل طور پر کیرن انڈیا کی ملکیت اس کا ایک ذیلی ادارہ ہے۔ ماضی میں کیرن انڈیا تیل اور گیس کی تلاش کا کام کرنے والے معروف برطانوی ادارے کیرن انرجی کا حصہ تھی مگر اب اُس کا اِس برطانوی کمپنی سے کوئی تعلق نہیں ہے۔ کیرن انڈیا اب بھارتی نژاد ارب پتی شخصیت  انیل اگروال کے بزنس گروپ کی ملکیت ہے۔

رپورٹ: عصمت جبیں

ادارت: مقبول ملک

DW.COM