1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

کھیل

سری لنکا ٹوئنٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ کے فائنل میں

آئی سی سی ٹوئنٹی ٹوئنٹی کرکٹ ورلڈ کپ کے دوسرے سیمی فائنل میں سری لنکا نے ویسٹ انڈیز کو 57 رنز سے ہرا کر فائنل میں جگہ بنا لی ہے۔ اب اتوار کو لارڈز کے میدان پر سری لنکا کا مقابلہ پاکستان سے ہوگا۔

default

جمعہ کو لارڈز میں کھیلے گئے میچ میں سری لنکا نے پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے مقررہ بیس اوورز میں پانچ وکٹوں کے نقصان پر 158 رنز بنائے۔ ویسٹ انڈیز کی ٹیم 159 رنز کے ہدف کا تعاقب نہیں کرسکی ہے۔

Sri Lanka Sport Cricket Cricketspieler Muttiah Muralitharan

مرلی کی گیند کا جادو

کپتان کرس گیل کے علاوہ ویسٹ انڈیز کا کوئی بھی کھلاڑی خاطر خواہ کارکردگی دکھانے میں کامیاب نہیں ہوسکا۔ گیل 63 رنز کے ساتھ آخر تک ناٹ آوٴٹ رہے۔ ویسٹ انڈیز کے تین بلے باز تو میتھوز کے پہلے ہی اوور میں ڈھیر ہو گئے جس کے بعد ویسٹ انڈیز کی ٹیم کو سنبھلنے کا موقع نہ مل سکا۔

سری لنکا کی جانب سے شاندار بولنگ کا مظاہرہ بھی ویسٹ انڈیز کی شکست کا ایک سبب رہا۔ میتھوز نے چار اوورز میں 16 رنز دے کر تین وکٹیں حاصل کیں، مینڈس نے نو رنز کے عوض دو جبکہ مرلی دھرن نے 29 رنز پر تین وکٹیں حاصل کیں۔

اس سے قبل سری لنکا کے افتتاحی بیٹسمین دلشان نے شاندار بلے بازی کا مظاہرہ کرتے ہوئے 96 رنزبنائے۔ وہ بھی ناٹ آوٴٹ رہے۔

Chris Gayle

ویسٹ انڈیز کے کپتان کرس گیل

میچ کے بعد ویسٹ انڈیز کے کپتان کرس گیل نے کہا کہ اصل میں دلشان ہی کھیل ان کے ہاتھ سے لے اُڑے۔ گیل نے کہا کہ ایک کھلاڑی کھیل کا پانسہ پلٹ سکتا ہے۔ گیل نے مزید کہا کہ ان کی ٹیم نے بری بولنگ نہیں کی بلکہ بیٹنگ میں انہیں اچھا آغاز نہیں مل سکا۔

سری لنکا کے کپتان اور وکٹ کیپر سنگاکارا نے کہا کہ جیت کا سہرا پوری ٹیم پر ہے، دلشان نے رنز کے ڈھیر لگائے تو میتھیوز نے وکٹیں ڈھیر کیں۔ سنگاکارا نے کہا کہ میتھیوز نے پہلے ہی اوور میں جو کرکے دکھایا، اس سے زیادہ کی توقع نہیں کی جا سکتی۔ دلشان کو مین آف دی میچ قرار دیا گیا۔

اس سے قبل ٹوئنٹی ٹوئنٹی عالمی کپ کرکٹ کے پہلے سیمی فائنل میں پاکستان نے جنوبی افریقہ کو سات رنزسے شکست دے دی تھی۔

جنوبی افریقہ میں کھیلے گئے پہلے ٹوئنٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ ٹورنامنٹ میں بھی پاکستان کی ٹیم فائنل تک رسائی حاصل کرنے میں کامیاب ہوئی تھی جہاں اسے بھارت کے ہاتھوں شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا۔ اس مرتبہ بھارت کی ٹیم سپر ایٹ مرحلے ہی سے باہر ہوگئی۔

DW.COM