1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

مہاجرین کا بحران

’سرحديں بند کرنا کوئی حل نہيں، تعاون بڑھانا ضروری‘

جرمن چانسلر انگيلا ميرکل نے کہا ہے کہ وہ اس ہفتے ہونے والی سمٹ ميں پوری کوشش کريں گی کہ تارکين وطن کی آمد کے سلسلے کو روکنے کے ليے يورپی يونين اور ترکی کے مابين معاہدے پر توجہ دی جائے نہ کہ سرحدوں کی بندش پر۔

جرمن چانسلر ميرکل نے کہا ہے کہ وہ اسی ہفتے جمعرات اور جمعے کو ہونے والے سربراہی اجلاس ميں يورپی يونين کے ترکی کے ساتھ طے پانے والے معاہدے کو آگے بڑھانے کی کوشش کريں گی کيونکہ سرحديں بند کرنے کا متبادل راستہ يورپی بلاک کے ليے منفی ثابت ہو سکتا ہے۔ انہوں نے اسرائيلی وزير اعظم بينجمن نيتن ياہو کے ہمراہ دارالحکومت برلن ميں ايک پريس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے يہ بات کہی۔

چانسلر ميرکل نے کہا کہ رواں ہفتے ہونے والی سمٹ مہاجرين کی يورپی ممالک کی تقسيم کے بارے ميں نہيں بلکہ اس بارے ميں ہوگی کہ آيا يورپی يونين اور انقرہ کے مابين طے پانے والا معاہدہ غير قانونی ہجرت کی وجوہات سے نمنٹے ميں کارآمد ثابت ہو گا يا بلاک اس منصوبے کو ترک کر کے يونان کی مقدونيہ اور بلغاريہ سے ملنے والی سرحد بند کرنے کے بارے ميں غور کرے۔ ميرکل نے البتہ خبردار کيا ہے کہ ايسا کوئی اقدام يونان، يورپی يونين اور شينگن زون کے ليے نقصان دہ ثابت ہو سکتا ہے۔

اسرائيلی وزير اعظم بينجمن نيتن ياہو اور جرمن چانسلر انگيلا ميرکل

اسرائيلی وزير اعظم بينجمن نيتن ياہو اور جرمن چانسلر انگيلا ميرکل

دريں اثناء يونانی وزير دفاع پانوس کامينوس نے کہا ہے کہ فوجی ٹيموں نے ايک عرصے سے تعطل کے شکار مہاجرين کے اندراج کے مراکز قائم کر ديے ہيں تاہم ممکن ہے کہ وہ استعمال ميں نہ آئيں۔ ان کے بقول بحيرہ ايجيئن کی نگرانی کے حوالے سے گزشتہ ہفتے نيٹو کے ساتھ طے پانے والے معاہدے کی نتيجے ميں يورپ پہنچنے والے پناہ گزينوں کی تعداد ميں واضح کمی کا امکان موجود ہے۔

يہ امر اہم ہے کہ ايتھنز حکومت ايک عرصے سے مہاجرين کی آمد کو محدود نہ کرنے کے سبب تنقيد کی زد ميں رہی ہے۔ پچھلے ہفتے ايسے مطالبات بھی سامنے آئے تھے کہ يونان کو چھبيس رکنی شينگن زون سے عارضی طور پر خارج کر ديا جائے۔ تاہم يورپی کونسل کے صدر ڈونلڈ ٹسک نے اسے خارج از امکان قرار ديتے ہوئے منگل کو کہا کہ يونان کے شينگن زون سے اخراج سے يورپ کو درپيش مسائل ختم نہيں ہوں گے۔ ٹسک نے بلاک کی بيرونی سرحدوں کی بہتر نگرانی اور انہيں محفوظ بنانے پر زور ديا، جس کے ليے ان کے بقول نہ صرف ايتھنز کو مزيد اقدامات کی ضرورت ہے بلکہ يورپی يونين کی اضافی مدد بھی درکار ہے۔

ملتے جلتے مندرجات