1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

ساتھی رہا نہ ہوئے تو مغوی فوجی مار ڈالیں گے: طالبان

پاکستان میں طالبان باغیوں نے کہا ہے کہ اگر ان کے ساتھی رہا نہیں کئے جاتے تو وہ مغوی تینتیس پاکستانی فوجیوں کو ہلاک کردیں گے۔

default

طالبان کےترجمان اکرام اللہ مہمند نے خبررساں ادارے روئٹرز کو ٹیلی فون پر بتایا کہ ان پاکستانی فوجیوں کو مختلف چھاپوں کے دوران قبضے میں لیا گیا ہے۔’’ہم اپنے جنگجو واپس چاہتے ہیں۔ اگر حکومت انہیں آزاد نہیں کرتی تو وہ اپنے فوجیوں سے ہاتھ دھو بیٹھی گی۔‘‘ یہ فوجی گزشتہ ہفتےملک کے شمال مغربی سرحدی علاقوں سےلاپتہ ہو گئے تھے۔

پاکستانی سیکیورٹی حکام نے گزشتہ ہفتے تین درجن کے قریب فوجیوں کے لاپتہ ہونے کی تصدیق کی تھی لیکن اس پر کوئی تبصرہ نہیں کیا گیا تھا کہ آیا وہ اغوا کر لئے گئے ہیں یا نہیں۔

Pakistan Swat-Tal

فرنٹیئر کور کے اہلکار گزشتہ ہفتےلاپتہ ہو گئے تھے

گزشتہ سال پاکستانی فوج نے افغانستان سے ملحقہ شمال مغربی سرحدی علاقوں میں طالبان باغیوں کے خلاف عسکری کارروائی شروع کی تھی۔ پاک فوج نے وادیء سوات اور جنوبی وزیرستان میں آپریشن میں ایک ہزار سے بھی زائد عسکریت پسندوں کو ہلاک کرنے کا دعویٰ کیا۔

امریکہ کو یقین ہے کہ پاکستان کے قبائلی علاقوں میں القاعدہ نیٹ ورک کے عسکریت پسندوں نے ’محفوظ ٹھکانے‘ بنائے ہوئے ہیں۔ تاہم پاکستانی سیکیورٹی فورسز نے ان علاقوں میں سرگرم مسلح باغیوں کے خلاف کامیابی کے دعوے کئے ہیں۔ یہ بات اور ہے کہ اب بھی کئی علاقوں میں فوج کو طالبان باغیوں کی جانب سے سخت مزاحمت کا سامنا ہے۔

پاکستانی حکومت خود اس بات کو تسلیم کر چکی ہے کہ مہمند اور اورکزئی ایجنسیوں میں طالبان باغی اب بھی پناہ لئے ہوئے ہیں۔

رپورٹ: عاطف بلوچ

ادارت: گوہر نذیر گیلانی

DW.COM