1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

روہنگیا کیمپوں میں ہیضے کی وبا پھیلنے کا امکان

عالمی ادارہٴ صحت نے متنبہ کیا ہے کہ روہنگیا مہاجرین کے کیمپوں میں حفظان صحت کی صورت حال مخدوش ہے۔ اس باعث ان کیمپوں میں مقیم لاکھوں افراد کو ہیضے کی وبا کا سامنا ہو سکتا ہے۔

ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن نے تشویش کا اظہار کیا ہے کہ بنگلہ دیش میں روہنگیا مہاجرین کے کیمپوں میں ہیضے کی وباء پھوٹنے کا امکان بڑھ گیا ہے۔ یہ بھی کہا گیا کہ اس وبا سے کیمپوں میں مقیم بچے اور کمزور افراد کو شدید صورت حال کا سامنا ہو سکتا ہے۔ کوکس بازار کے قریب قائم کیمپوں میں صفائی ستھرائی کم اور غلاظت و گندگی سمیٹنے کے بھی ناقص انتظامات ہیں۔

روہنگیا کو بین الاقوامی برادری کے تعاون کی اشد ضرورت ہے، اقوام متحدہ

روہنگیا بحران: سات ممالک نے سلامتی کونسل کا اجلاس طلب کر لیا

روہنگیا مسلمانوں کی سعودی امداد ’اقتصادی مفادات کا تحفظ‘

میانمار کے ہندوؤں کو بھارت میں پناہ کی اُمید

میانمار سے فرار ہو کر بنگلہ دیش پہنچنے والے چار لاکھ سے زائد روہنگیا مہاجرین کو عارضی کیمپوں میں ٹھہرایا گیا ہے۔ میانمار اور بنگلہ دیش کی سرحد پر عارضی خیموں سے بنائے گئے کُل اڑسٹھ کیمپ ہیں۔ ان کیمپوں کو حالیہ بارشوں کے دوران بھی مشکلات کا سامنا رہا۔ خیموں میں مقیم افراد کو کیچڑ اور بدبو دار پانی کے پہلو میں گزر بسر کرنا پڑی تھی۔

Rohingya Krise in Bangladesch (DW/M.M. Rahman)

میانمار سے فرار ہو کر بنگلہ دیش پہنچنے والے چار لاکھ سے زائد روہنگیا مہاجرین کو عارضی کیمپوں میں ٹھہرایا گیا ہے

عالمی ادارہٴ صحت کے مطابق ان کیمپوں میں خوراک، ادویات اور صاف پینے کے پانی کی شدید قلت ہے۔ عالمی ادارے کے مطابق صاف پینے کے پانی کی عدم دستیابی سے ہی ہیضے کی وباء پھوٹتی ہے۔ بنگلہ یش کے محکمہٴ صحت کے نائب سربراہ عنایت حسین نے نیوز ایجنسی اے ایف پی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ اُن کا محکمہ اپنی تمام تر کوششیں جاری رکھے ہوئے ہے تا کہ کوئی وبائی صورت حال نہ پیدا ہو سکے۔

ویڈیو دیکھیے 02:01

جنرل من آنگ لینگ تشدد کا سلسلہ روک پائیں گے ؟

چند روز قبل بین الاقوامی طبی امدادی تنظیم ڈاکٹرز ود آؤٹ بارڈرز نے بھی ایسا انتباہ جاری کیا تھا۔ اس تنظیم نے کہا تھا کہ روہنگیا کیمپوں میں صحت کے تناظر میں ایک آفت ظاہر ہو سکتی ہے کیونکہ ان کیمپوں میں غلاظت اور گندگی اب ڈھیروں کی صورت میں دکھائی دیتی ہے اور سارے علاقے میں تعفن پھیل چکا ہے۔ بنگلہ دیشی حکومت نے عالمی امدادی اداروں ک تعاون سے روہنگیا مہاجرین کی ویکسینیشن بھی شروع کر رکھی ہے۔

DW.COM

Audios and videos on the topic