1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

روس اور بھارت کی مشترکہ فوجی مشقیں، تعاون کا نیا باب

روس اور بھارت کی مسلح افواج انیس تا انتیس اکتوبر مشترکہ فوجی مشقوں میں حصہ لیں گی۔ دونوں ممالک کی بَری، بحری اور فضائی افواج پہلی مرتبہ مشترکہ فوجی مشقوں میں شامل ہوں گی۔

خبر رساں ادارے ڈی پی اے نے سترہ اکتوبر بروز منگل بتایا ہے کہ بھارت اور روس کی تینوں مسلح افواج کی مشترکہ مشقیں دونوں ممالک کے مابین زیادہ بہتر رابطہ کاری میں مدد فراہم کریں گے۔

دونوں ممالک کی تاریخ میں ایسا پہلی مرتبہ ہو رہا ہے کہ مشترکہ طور پر بری، بحری اور فضائی فوجی مشقوں میں شرکت کر رہے ہیں۔ یہ امر اہم ہے کہ دونوں ممالک کی بحری افواج سالانہ مشترکہ فوجی مشقیں کرتی رہتی ہیں۔

سب سے بڑی بھارتی امریکی بحری جنگی مشقوں میں جاپان بھی شامل

بھارت کے ساتھ کشیدگی، پاکستانی فوج کی سرحد کے قریب مشقیں

روس اور پاکستان کے درمیان جنگی مشقیں

ویڈیو دیکھیے 01:29

چینی اور پاکستانی فضائیہ کی مشترکہ عسکری مشقیں

بھارتی وزارت دفاع نے بتایا ہے کہ ’اندرا-2017‘ نامی یہ مشقیں روس کے مشرقی ملٹری ڈسٹرکٹ میں منعقد کی جائیں گی تاہم اس بیان میں اس عسکری مہم کے درست مقام کے بارے میں کوئی تبصرہ نہیں کیا گیا ہے۔

بیان کے مطابق سن دو ہزار سترہ ایک اہم سنگ میل ثابت ہو گا کیونکہ دونوں ممالک کی افواج کے مابین ہونے والی عسکری مشقوں کی نوعیت بدل دی گئی ہے۔

بھارتی فوج کے اعلیٰ اہلکار ستیش دوآ نے ان مشترکہ فوجی مشقوں کو اہم قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اس طرح دونوں ممالک کی افواج کو موقع ملے گا کہ وہ انسداد دہشت گردی کی خاطر کثیر الاقوامی ماحول میں کام کر سکیں۔

بتایا گیا ہے کہ ان مشقوں میں بھارت کے 380 فوجی شریک ہوں گے۔ ان میں سے 80 کا تعلق فضائیہ سے ہو گا۔ دوسری طرف ان مشقوں میں روس کے ایک ہزار فوجی شریک ہوں گے۔

روسی اور بھارتی افواج کی مشترکہ مشقیں ایک ایسے وقت پر ہو رہی ہیں، جب بھارت کی چین اور پاکستان سے ملحقہ سرحدوں پر کشیدگی دیکھی جا رہی ہے۔ اسی طرح جنوبی ایشیا میں چین کے بڑھتے ہوئے اثرورسوخ پر بھارت تحفظات کا شکار بھی ہے۔

سوویت دور میں بھارت اور روس کے تعلقات انتہائی قریبی تصور کیے جاتے تھے۔ اس کے علاوہ ان دونوں ممالک کے مابین دفاع کے شعبے میں بھی تعاون پایا جاتا ہے۔ روس بھارت کو دفاعی آلات فراہم کرنے والا ایک بڑا ملک بھی ہے۔

DW.COM

Audios and videos on the topic