1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

مہاجرین کا بحران

رضاکارانہ طور پر وطن واپسی کے ليے جرمن حکومت کی ويب سائٹ

جرمن حکومت نے ايک ايسی نئی ويب سائٹ جاری کر دی ہے، جو ان پناہ گزينوں کی رہنمائی کر سکے گی جن کی سياسی پناہ کی درخواستيں مسترد ہو چکی ہيں اور وہ رضاکارانہ بنيادوں پر واپس اپنے ملک جانا چاہتے ہيں۔

اس نئی ویب سائٹ کا ايڈريس www.returningfromgermany.com ہے۔ برلن حکومت نے يہ ويب سائٹ ملک بدری کے عمل ميں تيزی لانے کے ليے متعارف کرائی ہے۔ حکام کی کوشش ہے کہ ان ممالک کے پناہ گزينوں کی درخواستوں پر کارروائی اور فيصلے جلد از جلد کيے جائيں، جنہيں جرمنی ميں پناہ ملنے کے امکانات زيادہ ہيں۔ ان ميں شامی تارکين وطن سر فہرست ہيں۔ دوسری طرف ان ممالک سے تعلق رکھنے پناہ گزينوں کی ملک بدری کے عمل ميں تيزی لائی جائے، جہاں کے مہاجرين کو جرمنی ميں پناہ ملنے کے امکانات نہ ہونے کے برابر يا کم ہيں۔ ايسے مہاجرين ميں پاکستان سے سياسی پناہ کے ليے جرمنی سفر کرنے والے بھی شامل ہيں۔

اس ويب سائٹ پر رضاکارانہ ملک بدری کے ليے مشاورت کے مراکز، وطن واپسی پر امکانات اور ممکنہ مالی امداد کے بارے معلومات دستياب ہيں۔

جرمنی سے ناکام درخواست دہندگان کی ملک بدری نہ صرف پيچيدہ بلکہ کافی مہنگا عمل بھی ہے۔ اسی ليے برلن حکومت کی کوشش ہے کہ متعلقہ مہاجرين کو مالی امداد اور ديگر اقسام کی مدد فراہم کر کے انہيں اس کے ليے تيار کيا جائے۔ فنکے ميڈيا گروپ کے ايک مطالعے کے اعداد و شمار کے مطابق پچھلے سال کی پہلی سہ ماہی ميں لگ بھگ چودہ ہزار مہاجرين نے رضاکارانہ بنيادوں پر جرمنی سے اپنے اپنے آبائی ممالک کا رخ کيا تھا۔ رواں سال اسی عرصے کے دوران يہ تعداد ساڑھے آٹھ ہزار کے قريب ہے۔

ویڈیو دیکھیے 02:34

پاکستانی طلبا اور اعلیٰ تعليم يافتہ افراد کے ليے جرمنی ميں مواقع

Audios and videos on the topic