1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

فن و ثقافت

رجنی کانت کی نئی فلم، شائقین بے تابی سے منتظر

بھارت کے تامل فلم اسٹار رجنی کانت کی نئی فلم منظرِعام پر آنے کو ہے اور اس ریلیز سے قبل بھارت بھر میں ان کے کروڑوں مداح بے صبری سے اس فلم کے منتظر دکھائی دیتے ہیں۔ یہ فلم جمعہ اکیس جولائی کو ریلیز ہو رہی ہے۔

کابالی نامی اس فلم کی ریلیز سے قبل ہی شائقین اس فلم کے ابتدائی شوز کے ٹکٹوں کے حصول کی کوشش میں ہیں جب کہ ریاست تامل ناڈو کے دارالحکومت چنئی اور بھارت کے انفارمیشن ٹیکنالوجی کے مرکز بنگلور میں اہم کاروباری اداروں نے اپنے ملازمین کو ایک دن کی چھٹی دے دی ہے، تاکہ وہ یہ فلم دیکھ سکیں۔

شاپنگ اور ڈیلیوری ویب سائٹ اوئٹیرے ڈاٹ کام کے بانی ایس شری رام نے اپنے ادارے کے ملازمین کو یہ فلم دکھانے کے لیے کابالی فلم کے دو شوز بک کرائے ہیں۔

Indien Schauspieler Rajianikanth

بھارتی کارساز ادارے ماروتی سوزوکی نے بھی اس فلم کے گرافکس اور مکالموں سے مزین ایک گاڑی متعارف کروا دی ہے، جو تامل ناڈو میں بک رہی ہے۔

شیوا جی راؤ گائیکواڈ جنہیں عرف عام میں رجنی کانت کے نام سے جانا جاتا ہے، بنگلور میں ایک بس کنڈکٹر کے طور پر کام کرتے تھے، تاہم بعد میں وہ فلموں میں آئے اور انہوں نے مافوق الفطرت طرز کے ہیرو کے کردار نبھائے اور اپنے بے پناہ مداح بنائے۔

چنئی سے تعلق رکھنے والی ایک فضائی کمپنی سے وابستہ سری نواس جیاسیلن نے کابالی فلم دیکھنے کے لیے اس فلم کے ایک کے بعد ایک دس ٹکٹ بک کرائے ہیں۔ جب ان سے پوچھا گیا کہ آیا وہ رجنی کانت کی طرح کسی اور اداکار کے بھی اتنے بڑے مداح ہیں، تو ان کا جواب تھا، ’’میرا ایک باپ، ایک ماں اور ایک خدا ہے اور وہ خدا رجنی کانت ہے۔‘‘

تامل فلموں کے تجزیہ کار سُدھا جی تلک کہتے ہیں، ’’رجنی کانت لوگوں کے لیے ایک آئیڈیل ہیں، جنہیں کسی مذہبی پیشوا کی طرح پوجا جاتا ہے۔‘‘

تلک کا مزید کہنا تھا، ’’وہ غریب گھرانے سے تعلق رکھنے اور فلموں میں انصاف کے لیے لڑنے والے کردار کرنے کی وجہ سے لاکھوں لوگوں کو متاثر کرنے میں کامیاب رہے ہیں۔‘‘