1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

سائنس اور ماحول

راکٹ کی تباہی، بھارتی خلائی پروگرام کے لئے بڑا دھچکہ

بھارت کی جانب سے خلا میں ایک سیٹلائٹ (GSLV) کی روانگی کامیابی سے ہمکنار نہیں ہو سکی۔ اس سلسلے میں روانہ کیا جانے والا راکٹ فضا میں پہنچتے ہی خرابی کا شکار ہو گیا تھا۔

default

بھارتی راکٹ: فاسل فوٹو

خلا کی جانب روانہ کئےجانے والے اس راکٹ کو فضا میں پہنچے ابھی 47 سیکنڈ ہی گزرے تھے کہ اس میں خرابی پیدا ہو گئی اور وہ اپنے مقررہ راستے سے ہٹنا شروع ہو گیا۔ بھارتی خلائی ادارے کے مطابق اس راکٹ کو مشن کنٹرول نے تباہ کیا۔ یہ راکٹ بھارتی شہر چنائی سے 80 کلومیٹر کی دوری پر واقع راکٹ لانچنگ پیڈ سے چھوڑا گیا تھا۔

راکٹ لانچنگ پیڈ سری ہری کوٹہ کے مقام پر قائم ہے۔ خلا کو روانہ کئے جانے والے راکٹ کی دانستہ تباہی کی تصدیق انڈیا سپیس ریسرچ آرگنائزیشن (ISRO) کے چیئرمین کے رادھاکرشنن نے بھی کر دی ہے۔ رادھا کرشنن کے مطابق راکٹ کو آٹھ کلومیٹر کی بلندی پر تباہ کیا گیا تھا اور اس کا ملبہ اور سیٹلائٹ کے ٹکڑے خلیج بنگال کے گہرے پانیوں میں گرے ہیں۔

رادھا کرشنن نے راکٹ پرواز کی ناکامی کے حوالے سے مزید بتایا کہ راکٹ کے اندر موجود کمپیوٹر سے ڈیٹا کی ترسیل کے پروگرام نے پرواز کے شروع ہونے پر ہی کام کرنا چھوڑ دیا تھا۔ بھارتی خلائی ادارے کے سربراہ نے راکٹ کی تباہی اور سیٹیلائٹ کو مدار میں پہنچانے میں ناکامی کے حوالے سے مزید تحقیقات اور انکوائری شروع کرنے کا بھی عندیہ دیا ہے۔

Supermacht Indien Flash-Galerie

بھارت کا چاند کے لئے روانہ کیا گیا خلائی جہاز

بھارتی خلائی تحقیقی ادارے کے ٹیکنیکل سٹاف نے معمول کی چیکنگ کے بعد کرسمس ڈے پر Geosynchronous Satellite Launch Vehicle کے فضا میں پہنچائے جانے کو دوبارہ شیڈیول کیا تھا۔ پہلے اسے بیس دسمبر کو روانہ ہونا تھا لیکن بعض تکنیکی مسائل کے تناظر میں اس کو مؤخر کر دیا گیا۔ راکٹ میں روسی ڈیزائن کردہ انجن نصب تھا۔ اس کے اندر موجود تیل کے بہنے کی وجہ سے مرمت کا کام ضروری ہو گیا تھا، جس کے مکمل ہونے کے بعد اس کو پچیس دسمبر کو روانہ کیا گیا، جو ادھورا رہا۔

اسی سال جولائی میں ایک بھارتی راکٹ خلا میں پانچ سیٹلائٹ چھوڑنے میں کامیاب ہوا تھا۔ بھارت مسلسل خلائی ریسرچ میں مصروف ہے اور اس کی کوشش ہے کہ اگلے سالوں میں خلائی تحقیق پر بھی بیرونی دنیا کا انحصار کم سے کم کیا جا سکے۔

یہ پروگرام سن 1963ء میں شروع کیا گیا تھا۔ بھارتی خلائی پروگرام دوسرے ملکوں کے سیٹلائٹ بھی کمرشل بنیادوں پر خلا میں پہنچا رہا ہے۔ سن 2007 میں اس نے ایک اطالوی اور سن 2008 میں ایک اسرائیلی جاسوس سیٹلائٹ کو ایک کاروباری سودے کے تحت کامیابی سے خلا میں پہنچایا تھا۔

رپورٹ: عابد حسین

ادارت: امجد علی

DW.COM

ویب لنکس