1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

معاشرہ

راجہ رتنم کو کمپنی کی خفیہ معلومات دیں، سابق انٹیل عہدیدار

کمپنی کے اندرونی رازوں کے سبب مالی فائدہ اٹھانے سے متعلق وال اسٹریٹ کی کئی دہائیوں کی تاریخ کے سب سے بڑے اسکینڈل کی چھان بین جاری ہے۔ اس معاملے میں قریب دو درجن افراد پر الزامات عائد ہیں جن میں سب سے اہم راجہ رتنم ہیں۔

default

غیر قانونی طور پر منافع کمانے کے حوالے سے جاری مقدمے میں معروف کمپیوٹر چپ بنانے والی کمپنی انٹیل کے ایک سابق عہدیدار راجیو گوئل نے عدالت کے سامنے اعتراف کیا ہے کہ اس نے اس کمپنی کے کاروباری رازوں سے متعلق معلومات اپنے قریبی دوست راجہ رتنم کو فراہم کی تھیں۔

راجیوگوئل دوسرے فرد ہیں جنہوں نے اس مقدمے سے متعلق وعدہ معاف گواہ بننے کا فیصلہ کیا ہے۔ گوئل نے مین ہیٹن کی مرکزی عدالت کے سامنے اپنے بیان میں کہا کہ وہ اپنے دوست راجہ رتنم کو کمپنی کے بارے میں یہ معلومات دیتے ہوئے پریشان تھے کہ وہ کچھ غلط کررہے ہیں۔

Intel Logo vor Firmensitz in Santa Clara Kalifornien

انٹیل کمپنی کے ایک سابق عہدیدار کے مطابق اس نے راجہ رتنم کو کمپنی کی کاروباری معلومات فراہم کی تھی

گوئل نے بتایا کہ انہوں نے انٹیل کمپنی کی ایک اور وائرلیس نیٹ ورک کمپنی Clearwire Corp. کے ساتھ ممکنہ کاروباری شراکت کے بارے میں راجہ رتنم کو معلومات فراہم کی تھیں۔ اس معلومات کی بنیاد پر راجہ رتنم نے کلیئر وائر کمپنی کے شیئرز خرید کر ایک بڑا منافع کمایا۔

گیلیون ہیج فنڈ Galleon hedge fund کے سربراہ راجہ رتنم پر الزام ہے کہ انہوں نے کمپنی کی اندرونی معلومات کی بدولت غیر قانونی طور 45 ملین امریکی ڈالرز کا منافع کمایا۔ رتنم کی طرف سے ان الزامات کی تردید کی گئی ہے۔ ان الزامات کے سبب راجہ رتنم کو اکتوبر 2009ء میں گرفتار کیا گیا تھا، تاہم انہیں 100 ملین ڈالرز کے عوض ضمانت پر رہا کردیا گیا۔

اس معاملے میں اب تک دو درجن کے قریب افراد پر مقدمات قائم کیے گئے ہیں، جن میں آئی بی ایم اور انٹیل سمیت امریکہ کی کئی بڑی ترین کمپنیوں کے ملازمین شامل ہیں۔ ان میں سے 19 کو اب تک قصور وار ٹھہرایا جاچکا ہے۔

رپورٹ: افسراعوان

ادارت: شامل شمس

DW.COM

ویب لنکس