1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

معاشرہ

رابرٹ بلیک کا دورہ ء سری لنکا

جنوبی ایشیا کے لیےاعلیٰ امریکی مندوب آئندہ ہفتے سری لنکا کا دورہ کریں گے۔ خانہ جنگی کے آخری ایام میں سری لنکن افواج کی طرف سے مظالم ڈھائے جانے کے الزامات کے بعد ان کا یہ دورہ کافی اہمیت کا حامل سمھا جا رہا ہے۔

default

اعلیٰ امریکہ اہلکار کار رابرٹ بلیک یہ دورہ ایسے وقت میں کر رہے ہیں، جب کولمبو حکومت نے اقوام متحدہ کی اُس رپورٹ کو مسترد کر دیا ہے، جس میں کہا گیا ہے کہ سری لنکا کی افواج تامل باغیوں کے خلاف لڑی گئی جنگ کے آخری دنوں میں شہریوں کے خلاف مظالم ڈھانے کی مرتکب ہوئی تھیں۔

رابرٹ بلیک اپنے چھ روزہ دورے کے دوران سری لنکا کے علاوہ مالدیپ بھی جائیں گے۔ جمعہ کو امریکی اسٹیٹ ڈیپارٹمنٹ کی طرف سے جاری کیے گئے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ رابرٹ بلیک دونوں ممالک کی سیاسی قیادت کے علاوہ سول سوسائٹی کے سرکردہ کارکنان سے بھی ملیں گے۔

Flash-Galerie Internationaler Tag gegen Einsatz von Kindersoldaten Red Hand Day

اقوام متحدہ کے بقول سری لنکن فوج خانہ جنگی کے آخری ایام میں جنگی جرائم کی مرتکب ہوئی

ایک اعلیٰ امریکی اہلکار نے اپنا نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر خبر رساں ادارے اے ایف پی کو بتایا ہے کہ رابرٹ بیک کا یہ دورہ ایک ماہ پہلے سے ہی طے تھا۔ انہوں نے کہا کہ اگرچہ اس دورے کا تعلق اقوام متحدہ کی تازہ رپورٹ سے نہیں ہے تاہم وہ اس دوران اس امر پر بھی گفتگو ضرور کریں گے۔

پیرکو جاری ہونے والی اس رپورٹ میں کہا گیا تھا کہ خانہ جنگی کے آخری ایام میں سری لنکا کی افواج اور تامل باغی دونوں ہی جنگی جرائم کے مرتکب ہوئے تھے۔ کولمبو حکومت نے اقوام متحدہ کی اس رپورٹ کو فوری طور پر مسترد کرتے ہوئے اس عالمی ادارے پر الزام عائد کیا کہ وہ ان کے ملک کو کمزور کرنا چاہتا ہے۔

دوسری طرف امریکی حکومت نے اس رپورٹ پر تبصرہ کرتے ہوئے آزادانہ اور شفاف تحقیقات کروانے کا مطالبہ کیا ہے۔ اقوام متحدہ میں امریکی سفیر سوزن رائس نے کہا کہ اس معاملے کے تمام حقائق کی تہہ تک پہنچنا چاہیے۔

رپورٹ: عاطف بلوچ

ادارت: عاطف توقیر

DW.COM

ویب لنکس

ملتے جلتے مندرجات