1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

سائنس اور ماحول

ذیابیطس: آدھی گولی مدافعت کا بہترین علاج

ایک تازہ ریسرچ میں بتایا گیا ہے کہ اگر عام صحت مند شخص ذیابیطس کے لئے تجویز کردہ گولی کے نصف حصے کا استعمال معمول بنالے تو بیماری کا خطرہ ٹالا جا سکتا ہے۔

default

بین الاقوامی ادویات ساز ادارے گلیکسو سمتھ کلائن کے محققین کو یقین ہے کہ شوگر یا ذیابیطس مرض کے لئے تجویز کردہ دوا کی قلیل مقدار یا صرف آدھی گولی کا استعمال صحت مند افراد کے لئے بھی مفید ثابت ہوتا ہے۔ محققین کے خیال میں زیادہ وزن، موٹاپے اور معدے کی عوارض میں مبتلا افراد کو اس انداز میں دوا کے استعمال سے فائدہ یقینی ہے۔

دوا ساز ادارے کے ریسرچرز کا خیال ہے کہ اس طرح فالتو شکر کا بدن سے خارج ہونا انسانی صحت کے لئے بہتر اور مناسب ہو سکتا ہے۔ لیکن اس حوالے سے ہر فرد کے لئے ذاتی معالج کی رائے لینا بھی ضروری خیال کیا گیا ہے۔ ویسے بھی کوئی دوا بغیر معالج کی ہدایت کے استعمال کرنا مناسب نہیں ہوتا۔

اس مناسبت سے کی گئی حالیہ ریسرچ کینیڈا کے شہر ٹورانٹو کے یونیوررسٹی ہسپتال ماؤنٹ سینائی میں کی گئی ہے۔ ریسرچ کے نگران ڈاکٹر برنارڈ زینمان تھے۔ اس تحقیق میں گلیکسو سمتھ کلائن کی ایک دوا کو خاص طور پر استعمال کیا گیا جس میں میٹفارمن (Metformin) نامی مرکب شامل تھا۔ یہ شوگر یا ذیا بیطس کی پرانی دوا تصور کی جاتی ہے۔ اس نئی تحقیق میں آدھی گولی کے استعمال کے کئی افراد پر انتہائی مثبت نتائج مرتب ہوئے۔ ڈاکٹر برنارڈ زینمان نے نتائج کو مفید اور حوصلہ افزاء قرار دیا ہے۔ ریسرچ کے لئے دو سو سے زائد افراد کو منتخب کیا گیا تھا۔

Dengue Fieber in Honduras Spezialisten aus Kuba helfen

امریکہ کی جنوبی کیلیفورنیا یونیورسٹی کے مشہور طبی محقق ڈاکٹر تھامس بخانن کا بھی خیال ہے کہ اختراعی ادویات کا استعمال یقینی طور پر کئی بیماریوں کو روکنے کا سبب بن سکتا ہے۔ بخانن بھی کینیڈین ڈاکٹر برنارڈ زینمان کی ریسرچ پر گہری نظر رکھے ہوئے تھے۔

گلیکسو سمتھ کلائن کی ریسرچ میں شامل کی جانے والی دوا کے خلاف امریکی عدالت میں مقدمہ بھی جاری ہے کہ یہ دل کے اٹیک کا سبب بن سکتی ہے۔ اس مناسبت سے دوا ساز ادارے نے تازہ اعداد وشمار کوعدالت میں پیش کرنے کا اعلان کردیا ہے۔ دوسری جانب دوا اور خوراک کی نگرانی کرنے والے وفاقی امریکی ادارے نے بھی تازہ ڈیٹا کو منظور کرتے ہوئے اس پر غوروخوص کا عمل شروع کردیا ہے۔

ذیابیطس سے بچاؤ کا سب سے آسان ذریعہ تو ورزش کا باقاعدہ کرنا بتایا جاتا ہے لیکن اس پر مسلسل عمل پیرا ہونا مشکل محسوس کیا جاتا ہے۔ ایسے میں ڈاکٹر برنارڈ زینامن کی ریسرچ مسلسل بیٹھ کر کام کرنے والوں کے لئے مفید خیال کی جا رہی ہے۔ دنیا بھر میں اس مرض میں مبتلا افراد کی تعداد کا اندازہ کروڑوں میں ہے۔

رپورٹ: عابد حسین

ادارت: شادی خان سیف

DW.COM