1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

دوران پرواز آپس میں جھگڑنے پر دو بھارتی پائلٹ گراؤنڈ

دو بھارتی پائلٹوں کو ایک پرواز کے دوران کاک پٹ میں جھگڑا کرنے پر جہاز اڑانے سے روک دیا گیا ہے۔ بتایا گیا ہے کہ جیٹ ایئرویز کی ایک پرواز کے دوران کاک پٹ میں یہ جھگڑا ایک مرد اور ایک خاتون پائلٹ کے درمیان ہوا۔

خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق نئے سال کے پہلے روز لندن سے ممبئی جانے والی جیٹ ایئرویز کی ایک پرواز کے دوران کاک پٹ میں دونوں پائلٹوں کے درمیان پہلے تند و تیز جملوں کا تبادلہ ہوا، اس کے بعد مرد پائلٹ نے اپنی ساتھی خاتون پائلٹ کے منہ پر تھپڑ رسید کر دیا۔ بتایا گیا ہے کہ اس کے بعد خاتون پائلٹ کچھ دور کے لیے روتی ہوئی کاک پٹ چھوڑ کر باہر چلی گئی تھی۔

جہاز پر بچے کی پیدائش، ایئر لائن کی جانب سے ہمیشہ سفر مفت

خواتین کریو پر مشتمل پرواز نے دنیا کے گرد چکر لگایا ہے، ایئر انڈیا

بھارتی فضائیہ کا طیارہ لاپتہ، 29 افراد سوار تھے

اے ایف پی کے مطابق یہ واقعہ ایک ایسی پرواز کے دوران پیش آیا، جس میں 324 مسافر موجود تھے۔ متعدد بھارتی اخبارات کے مطابق اس دورانِ پرواز لڑائی میں مرد پائلٹ نے اپنی خاتون ساتھی سے کہا کہ وہ دوبارہ کیبن عملے میں جا ملے۔ بھارتی اخبار ٹائمز آف انڈیا کے مطابق اس دوران ایک موقع پر مرد پائلٹ بھی جہاز کا کنٹرول چھوڑ کر کاک پٹ سے کچھ دیر کے لیے باہر نکل گیا تھا۔

جیٹ ایئرویز کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ کاک پٹ عملے کے دوران ایک غلط فہمی اس معاملے کی وجہ بنی۔ تاہم کہا گیا ہے کہ یہ معاملہ فوری طور پر حل کر لیا گیا تھا اور پرواز کا ممبئی کی جانب سفر متاثر نہیں ہوا تھا اور وہ بہ حفاظت ممبئی میں اتری تھی۔

جیٹ ایئرویز کے بیان کے مطابق، ’’ایئرلائن نے اس حوالے سے پوری رپورٹ ڈائریکٹوریٹ جنرل آف سول ایوی ایشن (DGCA) کو بھجوا دی ہے اور اس سلسلے میں داخلی تفتیش مکمل ہونے تک اس معاملے میں ملوث عملے کے ارکان کو جہاز اڑانے سے روک دیا گیا ہے۔

ویڈیو دیکھیے 01:04

ایئر برلن کی آخری پرواز

بتایا گیا ہے کہ یکم جنوری پیر کے روز یہ پرواز عالمی وقت کے مطابق دس بجے صبح لندن سے اڑی تھی اور نو گھنٹے بعد ممبئی پہنچی تھی۔

اس ایئرلائن کے مطابق، ’’جیٹ ایئرویز مسافروں، عملے اور معاونین کی سلامتی کا بے انتہا خیال رکھتی ہے اور ایسا کوئی بھی معاملہ، جس سے سلامتی کی صورت حال متاثر ہو، اسے برداشت نہیں کیا جاتا۔‘‘

DW.COM

Audios and videos on the topic