1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

معاشرہ

دنیا کی دس طاقت ور ترین خواتین

خواتین اب معاشرتی رویوں کی پرواہ کیے بغیر کامیابیاں حاصل کر رہی ہیں۔ ایسی ہی دس طاقتور ترین خواتین عالمی سیاسی رہنماؤں کی فہرست میں شامل ہیں۔

نیوز ایجنسی اے ایف پی کے مطابق یہ دنیا کی دس طاقتور ترین خواتین ہیں۔

انگیلا میرکل

62 سالہ انگیلا میرکل سن 2005 میں جرمنی کی پہلی خاتون چانسلر منتخب ہوئی تھیں اور تب سے یورپ کی سب سے بڑی معیشت کی قیادت کر رہی ہیں۔ بین الاقوامی سطح پر اقتصادی، معاشی، اور سیاسی معاملات اور خصوصی طور پر مہاجرین کے بحران کے حوالے سے ان کی رائے کو انتہائی اہمیت دی جاتی ہے۔

ٹریزا مے

59 سالہ ٹریزا مے مارگریٹ تھیچر کے بعد رواں برس 13 جولائی کو برطانیہ کی دوسری خاتون وزیراعظم بنی تھیں۔ ٹریزا مے سن 2010ء سے برطانیہ کی وزیر داخلہ تھیں۔ وہ برطانیہ کے یورپی یونین کے ساتھ رہنے کی حامی تھیں۔ اب وہ یورپی یونین سے علیحدگی کے انتہائی نازک اور مشکل مرحلے کی ذمہ دار ہوں گی۔

ہیلری کلنٹن

68 سالہ ہیلری کلنٹن امریکا کی سابق خاتون اول، سینیٹر اور امریکا کی وزیر خارجہ رہ چکی ہیں۔ اب ہیلری کلنٹن وائٹ ہاؤس کو اپنی اگلی منزل کے طور پر دیکھ رہی ہیں۔ وہ امریکا کی تاریخ میں پہلی خاتون ہیں جنھوں نے ایک بڑی سیاسی جماعت میں صدارتی امیدوار کی نامزدگی حاصل کرنے میں کامیابی حاصل کی ہے۔

آنگ سان سوچی

71 سالہ نوبل انعام یافتہ آنگ سان سوچی میانمار میں جہوریت کی علمبردار ہیں۔ برما کے آئین کے تحت وہ اس ملک کی صدر بننے کی اہل نہیں ہیں۔ وہ تقریباﹰ پندرہ برس قید یا نظر بند رہی تھیں۔ سن 2015ء کے انتخابات میں ان کی سیاسی جماعت نے کامیابی حاصل کی تھی جس کے بعد وہ وزیر خارجہ اور خصوصی مشیر بنائی گئی تھیں۔ ان کی حیثیت تقریباﹰ وزیراعظم جیسی ہے۔

ایلن جونسن سرلیف

77 سالہ لائبیریا کی صدر ایلن جونسن نے اس وقت تاریخ رقم کی جب سن 2005ء میں وہ براعظم افریقہ میں کسی ملک کی پہلی خاتون صدر منتخب ہوئیں۔ وہ نوبل انعام بھی حاصل کر چکی ہیں۔

مشیل بیچلیٹ

64 سالہ مشیل بیچلیٹ چلی کی صدر ہیں اور لاطینی امریکا میں واحد خاتون سیاسی لیڈر ہیں۔ وہ اپوزیشن لیڈر کی حیثیت سے تشدد بھی برداشت کر چکی ہیں۔

کرسٹین لا گارڈ

60 سالہ لاگارڈ پہلی خاتون ہیں جو سن 2011ء کے اقتصادی بحران کے دوران بین الاقوامی مالیاتی فنڈ کی سربراہ مقرر ہوئی تھیں۔ وہ فرانس کی پہلی خاتون وزیر خزانہ بھی تھیں۔

جینٹ ییلن

69 سالہ جینٹ سن 2013ء میں امریکی فیڈرل ریزرو کی سربراہ تعینات ہوئی تھیں۔ وہ سابق امریکی صدر بل کلنٹن کے دور حکومت میں چیف اکانومسٹ بھی رہ چکی ہیں۔

بلگاریان بوکووا

64 سالہ بلگاریان سن 2009ء میں اقوام متحدہ کی ایجنسی یونیسکو کی پہلی خاتون سربراہ تعینات ہوئی تھیں۔ اس ادارے کے ذریعے وہ خواتین کے حقوق کے لیے سرگرم ہیں۔ وہ اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل کے عہدے کے لیے بھی شارٹ لسٹ کی جاچکی ہیں۔

مارگریٹ چین

68 سالہ مارگریٹ عالمی ادارہء صحت کی سربراہ ہیں اور اپنی قیادت میں خواتین کی صحت کے لیے خصوصی کام کر رہی ہیں۔

DW.COM