1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

’دسمبر کے آخر میں اسلام آباد میں دہشت گردانہ حملے کا خطرہ‘

پاکستان میں امریکی سفارت خانے کے مطابق اسے اطلاع ملی ہے کہ اس مہینے کے آخر میں، خاص طور پر کرسمس اور سال نو کی چھٹیوں کے دنوں میں پاکستانی دارالحکومت اسلام آباد میں ممکنہ طور پر دہشت گردانہ حملے کیے جا سکتے ہیں۔

اسلام آباد سے ہفتہ انیس دسمبر کی شام ملنے والی نیوز ایجنسی ایسوسی ایٹڈ پریس کی رپورٹوں میں کہا گیا ہے کہ اس سلسلے میں امریکی سفارت خانے نے امریکی شہریوں کو وارننگ بھی کر دی ہے، جس کے مطابق ’ممکنہ حملوں میں عبادت گاہوں اور خریداری کے مراکز کو نشانہ‘ بنایا جا سکتا ہے۔

ایسوسی ایٹڈ پریس نے لکھا ہے کہ اس امریکی وارننگ پر تبصرہ کرنے کے لیے ہفتے کے روز پاکستانی پولیس یا دیگر اہلکار دستیاب نہ ہو سکے۔ ایک پاکستانی انٹیلیجنس ایجنسی کے اہلکار نے، جو میڈیا سے بات چیت کا مجاز نہیں اور جس نے اپنی شناخت خفیہ رکھنا چاہی، اے پی کو بتایا کہ ’حملے کے عمومی خطرے کا اندازہ‘ تو ہے لیکن اس بارے میں کوئی مخصوص خطرات نہیں ہیں۔

اے پی کے مطابق امریکی سفارت خانے نے امریکی شہریوں کو جو تنبیہ کی ہے، اس میں کہا گیا ہے کہ وہ مارکیٹوں، ریستورانوں، ہوٹلوں اور عبادت گاہوں جیسے پرہجوم مقامات پر جانا اور وہاں اپنی موجودگی کا دورانیہ کم سے کم کر دیں۔

عام امریکی شہریوں کے برعکس امریکی حکومتی اہلکاروں کو اپنی نقل و حرکت کے سلسلے میں اضافی پابندیوں کا سامنا ہے۔

DW.COM