1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

معاشرہ

درخت لگا کر ثواب کمائیں، افغان طالبان کے لیڈر کا خصوصی پیغام

افغانستان کے طالبان کے سربراہ نے اپنے ایک خصوصی پیغام میں زیادہ سے زیادہ درخت لگانے کی ترغیب دی ہے۔ انہوں نے اپنے مسلح کارکنوں اور افغان عوام کو مشورہ دیا ہے کہ درخت لگانا کارِ خیر ہے اور اِس سے زمین کا حسن بڑھتا ہے۔

افغانستان میں کابل حکومت اور غیر ملکی افواج کے خلاف مسلح سرگرمیاں جاری رکھے ہوئے عسکریت پسند تنظیم طالبان کے سربراہ مولوی ہیبت اللہ اخوند زادہ نے اپنے ایک خصوصی پیغام میں اپنے کارکنوں اور افغان شہریوں کو ہدایت کی ہے کہ وہ زمین پر زیادہ سے زیادہ درخت لگا کر دنیاوی و اخروی فائدے حاصل کریں۔ طالبان کی جانب سے جاری ہونے والے اس خصوصی پیغام پر مختلف حلقے خوشگوار حیرت کا اظہار کر رہے ہیں۔

حالیہ ایام میں طالبان سربراہ کی جانب سے کچھ اور پیغامات بھی جاری کیے گئے تھے اور یہ سبھی روایت سے ہٹ کر تھے۔ ان میں عسکری کارروائیوں کے دوران عام شہریوں کے حوالے سے احتیاط اور سویلین ہلاکتوں سے ہر ممکن اجتناب کے علاوہ سن 1980 کی دہائی میں سابقہ سوویت یونین کے فوجی دستوں کے انخلا کا سالانہ یوم منانے کے بارے ہدایات شامل تھیں۔

Taliban Afghanistan Friedensprogramm (Getty Images/AFP/N. Shirzad)

افغان طالبان کو بھی درخت لگانے کی تلقین کی گئی ہے

اس پیغام میں مولوی ہیبت اللہ اخوندزادہ نے عسکریت پسندوں اور عام شہریوں پر زور دیا ہے کہ وہ پھلدار یا سایہ دینے والے دونوں طرح کے درخت لگائیں کیونکہ یہ نہ صرف عوام بلکہ زمین کے لیے بھی مفید ہو گا۔ انہوں نے مزید واضح کیا کہ درخت لگانے سے جہاں زمین پر اللہ کی مخلوق کو فائدہ حاصل ہو سکے گا وہاں اس کی خوبصورتی بھی بڑھے گی۔

 مولوی اخوندزادہ نے طالبان کی قیادت مئی سن 2016 میں سنبھالی تھی اور وہ بنیادی طور پر عالم دین ہیں۔ وہ پاکستان کے مختلف مذہبی مدارس میں پندرہ برس تک قران اور دین کی تعلیم بھی دیتے رہے تھے۔ اُن سے پہلے کے طالبان لیڈر ملا منصور امریکی ڈرون حملے میں ہلاکت ہو گئی تھی۔