1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

داعش کے اتحادی گروہ کے لیے اٹلی سے ہتھیار، کئی افراد گرفتار

اٹلی میں کئی ایسے افراد کو گرفتار کر لیا گیا ہے جو ایران اور لیبیا کے ساتھ ہتھیاروں کی غیر قانونی تجارت میں ملوث تھے۔ ان پر الزام ہے کہ انہوں نے لیبیا میں داعش کے اتحادی ایک گروہ کو بھی مبینہ طور پر اسلحہ فروخت کیا۔

اطالوی دارالحکومت روم سے منگل اکتیس جنوری کو ملنے والی جرمن نیوز ایجنسی ڈی پی اے کی رپورٹوں کے مطابق گرفتار شدگان پر الزام ہے کہ انہوں نے بغیر کسی قانونی اجازت نامے کے بیرون ملک مقیم متعدد افراد یا اداروں کو ایسے ہتھیار یا مصنوعات فروخت کیں، جو شہری کے علاوہ عسکری مقاصد کے لیے بھی استعمال ہو سکتی تھیں۔

داعش کی آن لائن جنگ اور امریکی فوج کے اناڑی ملازمین

جرمنی میں داعش کا پہلا حملہ کرنے والی لڑکی کو سزائے قید

اطالوی تفتیش کاروں کا دعویٰ ہے کہ ان افراد کو جن الزامات کا سامنا ہے، ان میں یہ بھی شامل ہے کہ انہوں نے شمالی افریقی ریاست لیبیا میں ایک ایسے گروپ کو بھی یہ ہتھیار فروخت کیے، جو اس ملک میں شام اور عراق کے وسیع تر علاقوں پر قابض شدت پسند تنظیم ’اسلامک اسٹیٹ‘ یا داعش کا اتحادی گروہ سمجھا جاتا ہے۔

اطالوی خبر رساں ادارے انسا اور اسی یورپی ملک کے کئی دیگر ذرائع ابلاغ کی منگل کو سامنے آنے والی رپورٹوں کے مطابق انہی افراد کے ذریعے لازمی طور پر درکار قانونی لائسنس کے بغیر ہی گزشتہ برسوں کے دوران ہیلی کاپٹر تک بھی فروخت کیے گئے۔

اطالوی جریدے ’لا ریپبلیکا‘ کے مطابق ان مشتبہ ملزمان نے 2011ء اور 2015ء کے دوران ہیلی کاپٹروں اور خودکار ہتھیاروں تک کے سودے بھی کیے تھے۔

ڈی پی اے نے اطالوی میڈیا کے حوالے سے بتایا ہے کہ جن افراد کو گرفتار کیا گیا ہے، ان کی تعداد چار ہے اور ان میں اٹلی ہی کا ایک ایسا نومسلم جوڑا بھی شامل ہے، جو اسلام قبول کرنے کے بعد بنیاد پرستانہ مذہبی رجحانات کا حامل ہو گیا تھا۔

DW.COM