1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

خیبر ایجنسی میں نیٹو ٹرک پر حملہ، دو افراد ہلاک

افغانستان میں نیٹو افواج کے لئے سامان رسد لے جانے والے ایک ٹرک پر خیبر ایجنسی کے قبائلی علاقے میں عسکریت پسندوں کی طرف سے جمعہ کو پٹرول بموں اور آتشیں ہتھیاروں سے کئے جانے والے ایک حملے میں دو افراد ہلاک ہو گئے۔

default

پشاور سے موصولہ رپورٹوں کے مطابق آج جمعہ کو علی الصبح خیبر ایجنسی کے شاہ خاص نامی گاؤں کے نواح میں نیٹو کے ایک مال بردار ٹرک پر یہ حملہ تقریباﹰ ایک درجن مسلح طالبان نے کیا، جس دوران فائرنگ کرنے کے علاوہ اس ٹرک پر پٹرول بم بھی پھینکے گئے۔

ایک مقامی پولیس اہلکار محمد ارشد خان کے مطابق ان شدت پسندوں نے پہلے فائرنگ کر کے اس ٹرک کے ڈرائیور اور اس کے ساتھی کو ہلاک کیا اور پھر اس ٹرک کو آگ لگا دی گئی۔ پاکستانی خفیہ اداروں کے اہلکاروں نے اس واقعے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ دہشت گرد اس حملے کے بعد جائے وقوعہ سے فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے۔

EUFOR-Hubschrauber in Bosnien abgestürzt

نیٹو افواج نے ستمبر میں پاکستانی فضائی جحدود کی خلاف ورزی کے تھی جس پر پاکستان نے اپنی سرحد بند کردی تھی

یاد رہے کہ نیٹو افواج کی طرف سے پاکستانی فضائی حدود کی خلاف ورزی اور پاکستانی علاقے میں کاروائی کے نتیجے میں دو فوجیوں کی ہلاکت کے بعد اسلام آباد نے احتجاجاﹰ 30 ستمبر کو پاکستان اور افغانستان کے درمیان وہ سرحدی راستے بند کر دئے تھے، جن کے ذریعے نیٹو دستوں کے لئے رسد افغانستان پہنچتی تھی۔

نیٹو دستوں کے لئے براستہ پاکستان اس سپلائی لائن کو امریکہ کی طرف سے معذرت کے بعد گزشتہ اتوار کو دوبارہ کھولا گیا تھا۔

افغانستان میں نیٹو کی مسلح افواج کے لئے سامان رسد زیادہ تر طورخم کی پاک افغان سرحد کے ذریعے ہی افغانستان پہنچایا جاتا ہے۔ پاکستان کے راستے نیٹو کی سپلائی لائن کی بندش کے عرصے میں، جب ایسے ہزاروں ٹرک کئی پاکستانی علاقوں میں سرحد پار کرنے کی اجازت کے انتطار میں تھے، عسکریت پسندوں کی طرف سے ایسے ٹرکوں اور ٹینکروں پر حملوں میں واضح اضافہ ہو گیا تھا۔ اس دوران بیسیوں ٹینکروں اور ٹرکوں کو آگ لگا دی گئی، جو کروڑوں کے نقصان کا باعث بنی۔

رپورٹ: سمن جعفری

ادارت: مقبول ملک

DW.COM

ویب لنکس