1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

خیبر ایجنسی میں خود کش حملہ، اٹھارہ ہلاک

پاک افغان شاہراہ پر واقع خیبر ایجنسی کے تحصیل جمرود کے نواحی علاقہ وزیرڈنڈ میں سیکورٹی فورسزپر ہونے والے خودکش حملے میں کم از کم اٹھارہ افراد ہلاک جبکہ بیس سے زیادہ زخمی ہوگئے ہیں۔

default

ہلاک ہونے والوں میں زیادہ تر پولیس اہلکار ہیں

ہلاک ہونے والوں میں زیادہ تر سیکورٹی اہلکار شامل ہیں یہ دھماکہ ایسے وقت میں کیا گیا جب سیکورٹی فورسز کے لائن آفیسر زرمت خان دیگر اہلکاروں سمیت علاقے میں امن و امان کی صورتحال کا جائزہ لینے کیلئے گشت کررہے تھے۔ ادھر ایدھی ویلفیر کے اہلکاروں کا کہنا ہے کہ دھماکے میں سترہ افراد ہلاک جبکہ تیس زخمی ہیں۔

خیبر ایجنسی کے پولیٹکل حکام کا کہنا ہے کہ لائن افسر زرمت خان اپنے عملے سمیت معمول کے گشت پر تھے کہ اس دوران ایک خودکش حملہ آورنے ان کی گاڑی کو نشانہ بنایا۔ دھماکے میں زخمی ہونے والوں کو علاج کیلئے حیات آباد میڈیکل کمپلکس پہنچا دیا گیا ہے، جن میں کئی کی حالت تشویش ناک بتائی جاتی ہے۔

ہسپتال میں اپنے زخمی رشتہ دار کو لانے والے واقعے کے ایک عینی شاہد ابراہیم خان کا کہنا ہے : ’’ہم قریبی دوکان میں موجود تھے کہ اس دوران ایک زور دار دہماکہ ہوا جب ہم باہر نکلے تو ہر طرف دھواں پھیل گیا تھا ہر طرف لاشیں اور زخمی پڑے تھے۔ اسی جگہ پر میرا رشتے دار بھی تھا، اسےڈھونڈ کر گاڑی میں ڈال کر یہاں ہسپتال پہنچایا۔ مرنے والوں میں زیادہ تر خاصہ دار ہیں جبکہ عام لوگ بھی مارے گئے ہیں۔ ہم نے خود کئی شدید زخمیوں کو گاڑیوں میں ڈالا ۔ یہ ایک قیامت کا منظر تھا۔‘‘

یہ بات قبل ذکر ہے کہ لائن افسر زرمت خان کو چند روزقبل ہی حکومت پاکستان نے سول ایوارڈ تمغہ شجاعت کیلئے نامزد کیا تھا۔علاقے کے لوگوں کا کہنا تھا کہ انہوں نے علاقے میں عسکریت پسندوں کے خلاف موثر کاروائی کی۔

Pakistan Anschlag Autobombe Peshawar

دھماکے سے سیکورٹی اہلکاروں کی گاڑی سمیت متعدد گاڑیاں بھی تباہ ہوئی ہیں

جمرود میں یہ دھماکہ خیبر ایجنسی کے دور دراز علاقے تیراہ میں فوجی ہیلی کاپٹر کے گر کر تباہ ہونے کے چند گھنٹے بعد ہوا جس میں پائلٹ اور معاون پائلٹ ہلاک ہوگئے، جبکہ دوسری جانب ملنے والی اطلاعات کے مطابق سیکورٹی فورسز کے ایک قافلے پر نامعلوم شرپسندوں کی جانب سے ہونے والے حملے میں ایک افسر جان بحق جبکہ دو زخمی ہوئے ہیں۔ اطلاعات کے مطابق یہ افسران ہیلی کاپٹر گرنے کے واقعے کی تحقیقات کیلئے تیراہ گئے تھے۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ سیکورٹی فورسز گزشتہ کئی ماہ سے علاقے میں موجود عسکریت پسندوں کے خلاف کارروائی میں مصروف ہے۔

رپورٹ: فریداللہ خان ،پشاور

ادارت: عاطف بلوچ

DW.COM

ملتے جلتے مندرجات