1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

’خونی ہیرے‘ لئے تھے: مشہور ماڈل کی گواہی

آج برطانوی ماڈل نیومی کیمبل نے جنگی جرائم کے ٹرائی بیونل میں لائبیریا کے سابق صدر چارلس ٹیلر کے خلاف گواہی کے دوران اِس بات کی تصدیق کی کہ 1997ء میں افریقہ کے ایک دورے کے موقع پر اُسے بطور تحفہ’خُونی ہیرے‘ ملے تھے۔

default

نیومی کیمبل گواہی دیتے ہوئے

آج جمعرات کو چالیس سالہ عالمی شہرت یافتہ ماڈل نے ہالینڈ کے شہر دی ہیگ میں خصوصی عدالت برائے سیرالیون کے روبرو یہ بھی کہا کہ اُسے واضح طور پر اِس بات کا علم نہیں تھا کہ یہ تحفہ چارلس ٹیلر کی جانب سے دیا گیا ہے۔ باسٹھ سالہ ٹیلر کو اِس عدالت میں اُس خانہ جنگی کے حوالے سے جنگی جرائم اور انسانیت کے خلاف جرائم کے سلسلے میں جوابدہ ہونا پڑ رہا ہے، جو 1991ء اور 2001ء کے درمیان مغربی افریقی ملک سیرالیون میں لڑی گئی۔ اِس خانہ جنگی کے دوران قتل و غارت گری، آبرو ریزی، انسانی اعضاء کاٹنے، بچوں کو فوجیوں کے طور پر سرگرمِ عمل کرنے اور لوگوں کو جنسی غلام بنانے کے ہولناک واقعات عمل میں آتے رہے۔ استغاثہ کی جانب سے ٹیلر پر الزام ہے کہ اُس نے ہمسایہ ملک لائبیریا میں باغیوں کو ہتھیار فراہم کئے تھے اور بدلے میں اُن سے ’خونی ہیرے‘ وصول کئے تھے۔

Kombo Charles Taylor Naomi Campbell

نیومی کیمبل نے تصدیق کی کہ اُسے ہیرے ملے تھے لیکن اُس نے کہا، اُسے یہ علم نہیں تھا کہ یہ چارلس ٹیلر کی جانب سے دئے گئے ہیں

کہا جاتا ہے کہ 1997ء میں جنوبی افریقہ میں منعقدہ ایک تقریب میں ٹیلر نے اِسی طرح کے کچھ ہیرے نیومی کیمبل کو تحفے کے طور پر دئے تھے۔ ٹیلر نے عدالت میں یہ موقف اختیار کر رکھا ہے کہ وہ بے گناہ ہیں اور ’خونی ہیرے‘ کبھی بھی اُن کی دسترس میں نہیں رہے۔ استغاثہ کو اُمید ہے کہ نیومی کیمبل کی گواہی سے وہ ٹیلر کے اِس موقف کو غلط ثابت کر سکے گا۔ 1997ء کی اِس تقریب میں پاکستان کے سابق سٹار کرکٹر عمران خان بھی اپنی اہلیہ جمائما خان کے ہمراہ شریک ہوئے تھے۔

کیمبل نے اپنے بیان میں کہا کہ یہ ہیرے اُس کے کمرے میں اُس وقت اُس کے حوالے کئے گئے، جب وہ رات کے کھانے کے بعد سونے کے لئے اپنے بستر میں بھی جا چکی تھی۔ اس برطانوی ٹاپ ماڈل نے کہا کہ دو مردوں نے اُس کے دروازے پر دستک دی تھی اور ایک چھوٹی سی تھیلی اُسے دی تھی۔ کیمبل کے مطابق اُس نے اگلی صبح اِس تھیلی کو کھولا، جس کے اندر اُسے ’بہت چھوٹے چھوٹے لیکن میلے کچیلے نظر آنے والے ہیرے‘ نظر آئے۔ کیمبل کے مطابق اِس تھیلی کے ساتھ ’کوئی تحریر یا نوٹ موجود نہیں تھا۔‘

Niederlande Kriegsverbrechertribunal Den Haag Charles Taylor

پانچ اگست کو لائبیریا کے سابق صدر چارلس ٹیلر دی ہیگ میں عدالتی کارروائی کے دوران نیومی کیمبل کی طرف سے دیا جانے والا بیان سن رہے ہیں

کیمبل نے مختلف سوالوں کے جواب دیتے ہوئے بتایا کہ اگلی صبح ناشتے پر اُس نے اپنی اُس زمانے کی ایجنٹ کے ساتھ ساتھ امریکی اداکارہ مِیا فَیرو کو بھی اِس تھیلی کے بارے میں بتایا اور یہ کہ اُن دونوں میں سے کسی نے یہ کہا کہ غالباً یہ ٹیلر کی طرف سے دیا گیا تحفہ ہو گا۔ تب کیمبل نے جواب میں کہا کہ خود اُس کے خیال میں بھی شاید ایسا ہی ہے۔

اِس بین الاقوامی عدالت میں نیومی کیمبل کی بطور گواہ پیشی پوری دُنیا میں ذرائع ابلاغ کی توجہ کا مرکز بنی ہوئی ہے۔ عدالت میں اِسی پیشی کی کارروائی مختلف ٹیلی وژن چینلز سے براہِ راست نشر کی جاتی رہی۔

رپورٹ: امجد علی

ادارت: مقبول ملک

DW.COM

ویب لنکس