1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

خواتین کا عالمی دِن اور خصوصی بین الاقوامی کانفرنس

آٹھ مارچ خواتین کے عالمی دِن سے پہچانا جاتا ہے۔ اِس دِن کو منانے کے سو سال ہونے والے ہیں۔ دنیا میں خصوصی تقریبات اور ریلیوں میں خواتین کی حالت زار کو بہتر بنانے کے وعدے وعیید کئے جاتے ہیں مگر عمومی صورت حال ویسی ہے۔

default

خواتین کے عالمی دِن پر پاکستان کی غیر سرکاری تنظیم آل پاکستان مائنارٹی آلائنس کی جانب سے جاری کیا گیا زنجیر میں جکڑی پاکستانی خاتون کا ہاتھ۔

خواتین کے عالمی دِن کے موقع پر دنیا کی چار سو اہم اور معتبر حثیت کی حامل خواتین نے عالمی سطح پر عورتوں کے لئے مساوی حقوق کا مطالبہ کیا ہے۔ اِن چار سو خواتین میں دو سربراہانِ مملکت بھی ہیں۔ یہ خواتین ایک اہم بین الاقوامی کانفرنس میں شریک ہیں جو اِس دِن کے سلسلے کے حوالے سے اقوام متحدہ کے نعاون سے شیڈیول ہے۔

یہ کانفرنس افریقی ملک لائبیریا کے دارالحکومت MONROVIA میں منعقد کی جا رہی ہے۔ لائبیریا کے ساتھ فن لینڈ بھی اِس کانفرنس کا شریک میزبان ہے۔ کانفرنس کے لئے فنڈ مہیا کرنے میں اقوام متحدہ بھی پیش پیش ہے۔

Frauentag

عالمی خواتین ڈے کے حوالے سے ایک بینر

مغربی افریقی ساحلی ملک لائبیریا میں خواتین کی بین الاقوامی کانفرنس میں میزبان ملک لائبیریا کی صدر Ellen Johnson Sirleaf کے علاوہ یورپی ملک فن لینڈ کی صدرTarja Halonen بھی شریک ہیں۔ دونوں خواتین صدور نے عالمی سطح پر خواتین کے کردار اور حثیت پر اظہارِ خیال کیا اور اُن کی حالت زار کو بہتر کرنے کی ضرورت کے ساتھ ساتھ اُن کو پابندیوں کی زنجیروں سے آزاد کرنے پر زور دیا۔

Ellen Johnson Sirleaf

لائبیریا کی صدر Ellen Johnson Sirleaf

شریک مہانوں میں سپین کی اول نائب صدر María Teresa Fernandez de la Vega کے علاوہ آئر لینڈ کی سابقہ اور پہلی خاتون صدر Mary Robinson بھی خواتین کے عالمی دِن کے حوالے سے بلائی گئی کانفرنس میں شریک ہیں۔ دو روزہ کانفرنس میں کینیڈا کی گورنر جنرل Michaelle Jean اپنے ملک کی نمائندگی کر رہی ہیں۔

Belgien EU Sondergipfel zu Russland Georgien Tarja Halonen

فن لینڈ کی صدر Tarja Halonen

کانفرنس کی شرکاء کا خیال ہے کہ اِس وقت دنیا بھر میں خواتین کے لئے ایک ایسے لائحہ عمل کو تیار کرنے کی ضرورت ہے جو اُن کے اندر قیادت کے مثبت پہلووں کو اجاگر کر سکے۔ شرکاء کا خیال ہے کہ خواتین کو اقوام کے اندر مساوی حقوق اور اُن کو با اختیار بنانے سے ہی امن اور سکیورٹی کے چیلنجز کا بہتر انداز میں مقابلہ کیا جا سکے گا۔ کانفرنس میں خواتین کے حقوق کو غضب کرنے اور منافی کوششوں پر بھی اظہارِ خیال کیا گیا۔ مختلف ملکوں میں عورتوں کی آبرُوریزی کے واقعیات کو خاص طور سے مقررین نے اپنا موضوع بنایا۔

لائبیریا کے دارالحکومت MONROVIA میں خواتین کے عالمی دِن کی مناسبت سے جاری دو روزہ کانفرنس کے ساتھ ساتھ خصوصی ثقافتی تقریبات کا بھی اہتمام ہے۔

Mary Robinson

ئر لینڈ کی سابق صدر میری رابن سن

خواتین کے عالمی دِن کے موقع پر یورپی کمیشن کی سویڈن سے تعلق رکھنے والی خاتون نائب صدر Margot Wallstrom نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ یورپی یونین کے ایوانوں میں خواتین ممبران کی تعداد اب بھی بہت کم ہے اور یورپ میں مرد امیدواروں کے انتخاب کو اہمیت حاصل ہے۔ یورپی کمیشن کی ایک مطالعاتی رپورٹ کے مطابق یورپی یونین کے ستائیس ملکوں کے کسی بھی ایوان زیریں میں نصف خواتین کی تعداد نہیں ہے۔ اِس میں سویڈن سب سے آگے ہے جہاں چھیالیس خواتین ایوان کی رکن ہیں۔ اِس کے بعد فن لینڈ اور ہالینڈ ہیں جہاں اکیالیس اکیالیس خواتین رکن پارلیمنٹ ہیں۔ دوسری یورپی ملکوں میں ہنگری کے ایوان میں خواتین کا تناسب گیارہ فی صد کے قریب ہے۔ اِسی طرح بڑے کاروباری اور دوسرے اداروں کی سربراہی میں بھی خواتین کی تعداد خاصی کم بتائی گئی ہے۔

بھارت، پاکستان اور بنگلہ دیش میں بھی خواتین کے عالمی دِن کے موقع پر خصوصی تقریبات کا اہتمام ہے جن میں غیر سرکاری تنظییموں کے علاوہ حکومتیں بھی شامل ہیں۔ ایسی تقریبات کا اہتمام ساری دنیا میں کیا گیا ہے۔ امریکی خواتین فوجی بھی اِس دِن کو منا رہی ہیں تو آسٹریلوی شہر برزبین میں خواتین کی خصوصی میراتھن شیڈیول ہے۔