1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

خفیہ جیلیں: یورپی ممالک پر سی آئی اے کی معاونت کا الزام

بعض یورپی ممالک پر مشتبہ دہشت گردوں کے خلاف 'غیر قانونی تفتیش' میں امریکی ادارے سی آئی اے کی معاونت کا الزام ہے۔ لیتھوینیا نے ایسے الزامات کی تحقیقات کا اعلان کردیا ہے۔

default

Barroso stellt Programm der EU-Kommission im EU-Parlament vor

یورپی کمیشن کے سربراہ ہوزے مانویل باروسو

یورپی کمیشن نے تفتیشی عمل کے دوران بنیادی انسانی حقوق کے احترام پر زور دیا ہے۔ یورپی کمیشن کے سربراہ ہوزے مانویل باروسو نے کہا کہ ایسے دعووں کی سچائی کا پتا چلانے کے لئے آزادانہ اور غیرجانبدارانہ تحقیقات ہونی چاہئے۔

وہ منگل کو بیلجیئم کے دارالحکومت برسلز میں لیتھوینیا کی صدر ڈالیا گریباؤسکائٹی کے ساتھ ایک مشترکہ نیوز کانفرنس سے خطاب کر رہے تھے۔

باروسو نے امریکہ کا نام لئے بغیر کہا کہ دہشت گردی کے خلاف کارروائیوں کے دوران بنیادی حقوق کے احترام کو ملحوظِ خاطر رکھا جانا چاہئے۔ ان کا کہنا تھا کہ بنیادی حقوق کے لئے احترام جتنا زیادہ دکھایا جائے گا دہشت گردی کے خلاف جنگ اسی قدر موثر ہوگی۔

گزشتہ ہفتے ایک امریکی ٹیلی ویژن 'اے بی سی' نے سی آئی اے کے ایک نامعلوم سابق اہلکار کے حوالے سے بتایا تھا کہ اس خفیہ ادارے کے زیرانتظام لیتھوینیا میں ایک خفیہ جیل تھی۔ اس رپورٹ کے مطابق لیتھونیا میں دارالحکومت ولنیئس سے باہر قائم اس خفیہ جیل میں آٹھ مشتبہ دہشت گرد قید تھے اور یہ جیل 2005 میں بند کر دی گئی تھی۔ امریکی ٹی وی کی رپورٹ میں یہ بھی کہا گیا کہ پولینڈ اور رومانیہ میں بھی سی آئی اے کی خفیہ جیلیں موجود رہی ہیں۔

لیتھونیا کی وزارت خارجہ ان خبروں کی پہلے ہی تردید کر چکی ہے۔ تاہم منگل کو یورپی کمیشن کے سربراہ کے ساتھ مشترکہ نیوز کانفرنس میں لیتھوینیا کی صدر ڈالیا گریباؤسکائٹی نے کہا کہ ان کا ملک اپنے خلاف ان الزامات کی تحقیق کرے گا۔

Litauen Jahrestag 2009 Baltischer Weg 1989 Dalia Grybauskaite

لیتھوینیا کی صدر ڈالیا گریباؤسکائٹی

ان کا کہنا تھا کہ وہ ان خبروں کی فی الحال تصدیق نہیں کر سکتیں تاہم اس حوالے سے تفتیش کی جائے گی اور ویلنیئس کی پارلیمان نے اس مقصد کے لئے ایک خصوصی کمیٹی تشکیل دے دی ہے۔ تاہم انہوں نے افسوس ظاہر کیا ہے کہ ان کا ملک ایسے الزامات کی زد میں ہے۔ ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ ان الزامات میں کس حد تک سچائی ہے اس کا فیصلہ لیتھوینیا ہی کرے گا۔

اُدھر کونسل آف یورپ کے ایک اعلیٰ عہدے دار ڈِک مارٹی نے لیتھوینیا سمیت ان الزامات کا سامنا کرنے والے ممالک پر زور دیا ہے کہ وہ ان دعووں کی تحقیق کریں۔ ڈِک مارٹی کا کہنا ہے کہ اب وقت آ گیا ہے کہ یورپ اس شرم ناک سلسلے میں اپنا کردار واضح کرے۔ ان کا کہنا تھا کہ ملکی مفاد کا غیرمنصفانہ نظریہ حقائق چھپانے کے لئے استعمال نہیں کیا جانا چاہئے۔ ڈِک مارٹی نے کہا ہے کہ محض تردید اور راہ فرار سے کام نہیں چلے گے بلکہ یورپی ممالک کو ثابت کرنا ہو گا کہ ان کے ہاتھ صاف ہیں۔

امریکی تفتیش کار ادارے 'سی آئی اے' کے متنازعہ طریقہ تفتیش پر امریکی اٹارنی تفتیش کے لئے ایک خصوصی استغاثہ مقرر کر چکے ہیں۔

رپورٹ: ندیم گِل

ادارت: کشور مصطفیٰ

DW.COM

Audios and videos on the topic