1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

حماس دہشت گرد تنظیموں کی فہرست میں برقرار رہے، یورپی عدالت

یورپی یونین کی اعلیٰ ترین عدالت کے مطابق حماس کو یورپی یونین کی دہشت گرد تنظیموں سے متعلق فہرست میں برقرار رہنا چاہیے۔

یورپی یونین کی اعلیٰ ترین عدالت کے مطابق حماس کو یورپی یونین کی دہشت گرد تنظیموں سے متعلق فہرست میں برقرار رہنا چاہیے۔ سن 2014ء میں ایک ماتحت یورپی عدالت نے فیصلہ دیا تھا کہ حماس کو یورپی یونین کی دہشت گردوں کی فہرست سے نکال دیا جانا چاہیے، کیوں کہ یہ فیصلہ میڈیا اور انٹرنیٹ رپورٹوں کی بنیاد پر کیا گیا۔ اس فیصلے پر امریکا اور اسرائیل کی جانب سے شدید ردعمل سامنے آیا تھا۔

برسلز کی جانب سے اس عدالتی فیصلے پر نظرثانی کے لیے اعلیٰ ترین عدالت سے رجوع کیا گیا تھا۔ یورپی یونین کی سب سے اعلیٰ عدالت کی جانب سے اس فیصلے کے بعد اب حماس اس فہرست کا حصہ رہے گی۔ یورپ کی اعلیٰ ترین عدالت نے بدھ کے روز فیصلہ دیا ہے کہ حماس کو دہشت گرد تنظیموں کی یورپی فہرست میں ہونا چاہیے۔

گزشتہ برس ستمبر میں ایک سینیئر وکیل کی جانب سے بتایا گیا تھا کہ یورپی یونین کی جانب سے حماس کو دہشت گرد تنظیم قرار دینے سے متعلق فیصلے کے عمل میں متعدد غلطیاں کی گئیں، جس کی بنیاد پر قانونی طور پر یہ فیصلہ نادرست ہے۔

Gaza-Stadt Hamas Kämpfer (Reuters/M. Salem)

یورپی یونین حماس کو دہشت گرد تنظیم قرار دیتی ہے

یورپی عدالت برائے انصاف بدھ کے روز سری لنکا کے ماضی کے باغی گروپ لبریشن ٹائیگرز آف تمل ایلام (LTTE) سے متعلق بھی دینے جا رہی ہے۔

مبصرین کے مطابق اگر حماس کو دہشت گرد تنظیموں کی فہرست سے نکالا جاتا، تو اس سے یورپی یونین اور اسرائیل کے درمیان پہلے سے کشیدہ تعلقات مزید خراب ہو سکتے تھے۔۔ اسرائیل کی جانب سے باقاعدگی سے الزامات عائد کیے جاتے رہے ہیں کہ یورپی یونین دہشت گردی کے حوالے سے کم زور موقف کی حامل ہے، جب کہ اسرائیلی حکومت مقبوضہ علاقوں میں یہودی آباد کاری پر یورپی تنقید پر بھی برہم ہے۔

گزشتہ ہفتے اسرائیلی وزیراعظم بینجمن نیتن یاہو نے یورپی یونین کی جانب سے اسرائیل سے کیے جانے والے سیاسی مطالبات کو بھی 'مکمل پاگل پن‘ قرار دیا تھا۔

اس فہرست میں شامل کر کے یورپی یونین نے حماس کے تمام تر اثاثے منجمد اور اس سے تعلق رکھنے والے افراد کے خلاف سفری پابندیاں عائد کر رکھی ہیں۔ ستمبر 2001ء میں امریکا میں ہوئے دہشت گردانہ حملوں کے بعد یہ اقدام اٹھایا گیا تھا۔ حماس ابتدا ہی سے اس یورپی فیصلے کی مخالفت کرتی آئی ہے۔ حماس کا موقف ہے کہ وہ غزہ پٹی میں عوام کی منتخب حکومت قائم کئے ہوئے ہے اور اسے یہ حق حاصل ہے کہ وہ اسرائیل کے خلاف عسکری آپریشن کرے۔