1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

معاشرہ

حلب کے ہلاک شدگان کی یاد  میں گرجا گھروں میں تعزیتی گھنٹیاں

دنیا بھر کے گرجا گھروں میں آج سے روزانہ شام کے شہر حلب میں جنگ کے نتیجے میں ہلاک ہونے والے شہریوں کی یاد میں چرچ کی تعزیتی گھنٹیاں بجانے کے سلسلے کا آغاز کیا جا رہا ہے۔

Finnland Helsinki Kallio Kirche (Reuters/J. Rosendahl)

فنش گرجا گھروں میں عام طور پرتعزیتی گھنٹیاں اُس وقت بجائی جاتی ہیں جب مرنے والے کی میت کو آخری رسومات کے بعد چرچ سے باہر لایا جاتا ہے

گرجا گھر وں کی گھنٹیاں بجائے جانے کے اس سلسلے کا آغاز شام میں حلب کے محصور علاقوں پر شامی اور روسی بمباری کے تناظر میں رواں ماہ کی بارہ تاریخ کو فِن لینڈ کے شہر ہیلسینکی کے علاقے کالیو میں لوتھراں کے چرچ سے کیا گیا تھا۔

کالیو کلیسا کے علاقے کے پادری تِیمو لاجاسالو نے خبر رساں ادارے روئٹرز کو بتایا،’’حلب کے بارے میں پڑھنے کے بعد ہم نے فیصلہ کیا کہ مرنے والوں کی یاد میں روزانہ شام پانچ بجے چرچ کی گھنٹیاں بجائی جائیں گی۔ آغاز میں اس حوالے سے میں نے صرف چند مقامی گرجا گھروں کو ساتھ ملنے کے لیے کہا۔‘‘

لاجا سالو کا کہنا تھا کہ جلد ہی نہ صرف ملکی سطح پر بلکہ یورپ بھر میں سینکڑوں گرجا گھروں نے حلب میں ہلاک ہونے والے شہریوں کی یاد میں چرچ میں تعزیتی گھنٹیاں بجا کر شمولیت اختیار کرنا شروع کردی۔ بعد ازاں فِن لینڈ کے ’’ایوانگیلیکل لوتھرن چرچ ‘‘ نے یاد منانے والے شرکاء کے لیے ’’بلز فار آلیپو ‘‘ کے نام سے ایک ویب سائٹ بھی تشکیل دے دی۔

Deutschland Holstentor und Turm der Petrikirche in Lübeck (picture alliance/Bildagentur-online/Schickert)

امریکا ، برطانیہ اور آسٹریلیا سمیت بیس سے زائد ممالک کے پانچ سو سے زائد گرجا گھروں نے اس مہم میں شمولیت اختیار کی ہے

 اس ویب سائٹ پر جاری اعداد و شمار کے مطابق امریکا ، برطانیہ اور آسٹریلیا سمیت بیس سے زائد ممالک کے پانچ سو سے زائد گرجا گھروں نے اس مہم میں شمولیت اختیار کی ہے۔ حلب کے ہلاک شدگان کی یاد میں گرجا گھر کی گھنٹیاں بجانے کا سلسلہ اقوامِ متحدہ کے دن چوبیس اکتوبر تک جاری رہے گا۔

 لاجاسالو کا کہنا تھا،’’ ہم سب حلب میں ہونے والے تباہ کن واقعات دیکھتے ہیں لیکن  صورتِ حال کی پیچیدگی کے باعث خود کو بے بس پاتے ہیں۔ چرچ کی گھنٹیوں کے ذریعے ان ہلاکتوں کے خلاف در اصل ہم دنیا تک اپنی آواز پہنچانا اور بہتر مستقبل کی امید دلانا چاہتے ہیں۔‘‘

خیال رہے کہ فنش گرجا گھروں میں عام طور پرتعزیتی گھنٹیاں اُس وقت بجائی جاتی ہیں جب مرنے والے کی میت کو آخری رسومات کے بعد چرچ سے باہر لایا جاتا ہے۔

DW.COM