1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

جی ٹوئنٹی کے حاشیے میں پوٹن اور ٹرمپ کی ملاقات

ہیمبرگ میں منعقدہ جی ٹوئنٹی اجلاس کے حاشیے میں امریکی اور روسی صدور نے ملاقات کی ہے۔ یہ ملاقات نصف گھنٹے کے لیے طے کی گئی تھی، جو تقریباً دوگھنٹوں تک جاری رہی۔

ہیمبرگ میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اور روس صدر ولادیمیر پوٹن کی خصوصی ملاقات میں دونوں لیڈروں نے اس عزم کا اظہار کیا کہ وہ تناؤ کے شکار دو طرفہ تعلقات کو بہتر بنانے کی ہر ممکن کوشش کریں گے۔ اسی ملاقات میں پوٹن اور ٹرمپ نے شام میں جنگ بندی پر اتفاق بھی کیا۔

ٹرمپ نے اس موقع پر کہا کہ روسی صدر سے ذاتی سطح پر ملاقات کرنا اُن کے لیے ایک اعزاز کی بات ہے۔ اس کے جواب میں ولادیمیر پوٹن نے کہا کہ وہ بھی امریکی صدر کے ساتھ اس ملاقات پر بہت خوشی محسوس کر رہے ہیں۔ اس ملاقات کے بعد اردن نے شام کے لیے جنگ بندی معاہدے کی تصدیق بھی کر دی ہے۔

ویڈیو دیکھیے 00:10

ٹرمپ اور پوٹن کا مصافحہ

 

امریکی صدر نے اس ملاقات کے بعد صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ صدر پوٹن کے ساتھ بات چیت کے دوران عالمی امور کے کئی معاملات زیر بحث آئے۔ ٹرمپ نے اس ملاقات کو انتہائی حوصلہ افزاء قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس پہلو پر بھی غور کیا گیا کہ مستقبل میں دونوں ملک کس طرح  مل کر کام کر سکتے ہیں۔

ٹرمپ نے اس موقع پر یہ بھی کہا کہ روس میں اس دوران ایسی کئی مثبت پیش رفت ہوئی ہیں، جو امریکا کے علاوہ کئی دوسرے ممالک کے لیے بھی اہم ہو سکتی ہیں۔

اس ملاقات کا سب سے اہم پہلو جنوب مغربی شام میں جنگ بندی پر اتفاق ہے۔ امریکی، روسی اور اردنی ماہرین کے بقول یہ جنگ بندی نو جولائی سے نافذ العمل ہو گی۔

 

 

 

جی ٹوئنٹی گروپ کے سربراہان مملکت و ریاست کا دو روزہ اجلاس

 

 

 

 

 

DW.COM

Audios and videos on the topic