1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

جی بیس اجلاس: کیا فیصلہ ہو چکا ہے، صرف اعلان باقی ہے؟

جی بیس رکن ممالک کے رہنماؤں کی عالمی مالیاتی بحران سے نمٹنے کے لئے بلوائی جانے والی ایک ہنگامی سمٹ واشنگٹن میں جاری ہے۔

default

امریکی صدر جارج بش اور جرمن چانسلر انگیلا میرکل

اس سمٹ میں نو منتخب امریکی صدر باراک اوباما شریک نہیں ہو رہے ہیں تاہم ان کی جگہ ان کے نمائندے اس سمٹ میں شریک رہے گے۔ اس سمٹ کی صدارت موجودہ امریکی صدر جورج بش کر رہے ہیں۔ جی بیس کی ہنگامی سمٹ کے آغاز سے قبل یورپی یونین نے ایک مرتبہ پھر زور دیا کہ عالمی سطح پر سرمائے کی نقل وحرکت کو زیادہ بہتر طور پر منظم کیا جانا چاہیئے۔

Stabchef Rahm Emanuel und Barack Obama

نو منتخب امریکی صدر باراک اوباما اس اجلاس میں شرکت نہیں کر رہے ہیں تاہم ان کے قریبی رفقاء اجلاس میں شامل ہیں

جرمن وزیر خزانہ پئیر شٹائن بروک نے کہا ہے کہ اس سمٹ کی کامیابی اسی صورت میں ممکن ہو سکے گی اگر عالمی رہنما ریگولیٹری فریم ورک کے مینڈیٹ پر متفق ہو جاتے ہیں۔ جرمن چانسلرمیرکل نے واشنگٹن کانفرنس کے آغاز سے پہلے یہ امید ظاہر کی کہ اس سمٹ کے ٹھوس نتائج پرآمد ہوں گے۔

اس بارے میں اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل بان کی مون نے خبردار کیا ہے کہ یہ مالیاتی بحران پوری انسانیت کے لئے ایک المیہ ثابت ہو سکتا ہے۔ واشنگٹن میں اسی مالیاتی بحران کے پس منظر میں جمعہ کی شام شروع ہونے والی بیس کے گروپ کی سربراہی کانفرنس ہفتےکے روز بھی جاری رہے گی۔ جس میں عالمی مالیاتی بحران سے نمٹنے کے لئے پالیسی سازی کے لئے تجاویز ترتیب دی جائیں گی۔

ناقدین کا کہنا ہے کہ اس سمٹ میں بہت سی باتیں پہلے سے طے کر لی گئی ہیں اور امید کی جا رہی ہے کہ عالمی مالیاتی بحران سے نمٹنے کےلئے موجودہ مالیاتی نظام کو بہت بنانے کی کوشش کی جائے گی۔

Audios and videos on the topic