1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

جینیاتی تبدیلیوں والی زرعی پیداوار سے متعلق یورپی تنازعہ

جینیاتی تبدیلیوں کے عمل سے گزر چکنے والے بیجوں سے تیار شدہ خوراک اب یورپ میں متنازعہ بن چکی ہیں۔ کئی یورپی ملکوں میں ایسی فصلوں کو کاشت کے حوالے سے خاصی مزاحمت پائی جاتی ہے۔

default

یورپی کمیشن کے ہیلتھ سیکریٹری: جان ڈالی

یورپی کمیشن جینیاتی تبدیلیوں والے بیجوں سے فصلوں کی کاشت کے حامی اور مخالفین کے درمیان پیدا شدہ تعطل کو ختم کرنے کی کوشش میں ہے اور اب تجویز کیا گیا ہے کہ مختلف یورپی ملک اپنے ہاں کے زرعی، ماحولیاتی اور مقامی معاملات کے تناظر میں ان پر پابندی کا فیصلہ کریں۔ اس معاملے پر یورپ میں جینیاتی تبدیلیوں والی خوراک کے حامی اور مخالفین پوری طرح تقسیم کا شکار ہیں اور نئی تجویز پر احتجاج کی منصوبہ بندی بھی شروع کر دی گئی ہے۔

یورپی یونین کے ہیلتھ کمشنر جان ڈالی کا کہنا ہے کہ یورپی کمیشن جینیاتی حوالے سے اختراع شدہ بیجوں اور فصلوں کا نہ تو حامی ہے اور نہ ہی مخالف۔ ڈالی کے مطابق دور جدید کے تقاضوں کی روشنی میں یورپ بیکار نہیں رہ سکتا اور سیاسی بردباری کے ساتھ کسی حتمی فیصلے تک پہنچنے کا وقت آ گیا ہے۔ ڈالی کا مزید کہنا تھا کہ نئی فصلوں کی کاشت پر حکومتی فیصلوں کے حوالے سے یورپی یونین میں اختلاف پایا جاتا ہے اور اسی لئے یورپی کمیشن نے تجویز کیا ہے کہ جینیاتی تبدیلیوں والی فصلوں کی کاشت یا ان پر پابندی کا فیصلہ یورپی ملکون کی حکومتیں خود کریں۔

فرانس نے یورپی کمیشن کی تجویز کو ناقابل قبول قرار دے دیا ہے۔ فرانسیسی وزیر ماحولیات Jean-Louis Borloo کا کہنا ہے کہ اس تجویز میں جینیاتی اختراع شدہ فصلوں کی کاشت کی منظوری کے جواز کی پوری طرح وضاحت نہیں کی گئی۔

Deutschland Flash-Galerie Biologische Landwirtschaft Genmais verboten

مکئی کی متنازعہ قسم MON 810

جینیاتی سطح پر اختراع شدہ فصلوں اور ان سے حاصل ہونے والی اشیائے خوراک کے حامی خیال کرتے ہیں کہ اس معاملے میں یورپ باقی ماندہ دنیا سے بہت پیچھے رہ گیا ہے۔ اس کے برعکس مخالفین کا خیال ہے کہ ایسی فصلوں اور ان سے حاصل ہونے والی پیداوار انسانوں سمیت زمین کے ایکو سسٹم کو مسلسل نقصان پہنچا رہے ہیں۔ حامیوں کا خیال ہے کہ ایسی فصلوں کی کاشت سے پیداوار بہت زیادہ ہوتی ہے اور یہ فصلیں دنیا سے غربت کے خاتمے میں کلیدی کردار ادا کر سکتی ہیں۔

یورپ میں جینیاتی تبدیلیوں والی فصلیں اگانے کی منظوری کے حوالے سے کئی ممالک باہمی طور پر تقسیم رائے کا شکار ہیں۔ مثلاً مکئی کی ایک قسم MON 810 ہے۔ یہ جرمنی، لکسمبرگ، آسٹریا، ہنگری، فرانس اور یونان میں کاشت کرنا ممنوع ہے جبکہ سپین، پرتگال، چیک جمہوریہ، رومانیہ اور پولینڈ میں اس کی باقاعدہ طور پر اور بھرپور انداز میں کاشت کی جاتی ہے۔

رپورٹ: عابد حسین

ادارت: مقبول ملک

DW.COM