1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

جولیان آسانج : ضمانت کی درخواست نامنظور

لندن کی ایک عدالت نے آسانج کی ضمانت کی درخواست نامنظور کر دی ہے۔ جج نے خدشہ ظاہر کیا ہے کی ضمانت کی صورت میں وہ فرار ہو سکتے ہیں۔ تاہم آسانج نے کہا ہے کہ وہ خود کو سویڈن واپس بھیجے جانے کے خلاف جدوجہد جاری رکھیں گے۔

default

وکی لیکس کے بانی جولیان آسانج

لندن میٹرو پولیس کےمطابق وکی لیکس کے بانی جولیان آسانج نے منگل کے روز گرفتاری کے لیے خود کو برطانوی پولیس کے حوالے کیا ۔ پولیس کے مطابق ان کی گرفتاری جنسی جرائم کے الزامات میں سویڈن کی عدالت سے جاری ہونے والے بین الاقوامی وارنٹ کے نتیجے میں ہوئی۔ انہیں برطانیہ کے مقامی وقت کے مطابق صبح ساڑھے نو بجے گرفتار کیا گیا۔

سویڈن حکام 39 سالہ آسانج سے مختلف الزامات کے تحت تفتیش کرنا چاہتے ہیں، جن میں جنسی زیادتی کا معاملہ بھی شامل ہے، تاہم وہ ان الزامات کی تردید کرتے ہیں۔ جولیان آسانج اور ان کی ویب سائٹ وکی لیکس حال ہی میں امریکی خفیہ سفارتی دستاویزات شائع کرنے کے بعد امریکہ سمیت دنیا کے کئی ممالک کے غیض وغضب کا مرکز بنے ہوئے ہیں۔ گزشتہ روز سوئٹزر لینڈ میں ان کے ایک اکاؤنٹ کو بھی حکام نے منجمد کرنے کا اعلان کیا تھا۔

Julian Assange Wikileaks Verhaftung London Großbritannien Flash-Galerie

برطانوی پولیس نے آسانج کو منگل کے دن مقامی وقت کے مطابق صبح ساڑھے نو بجے گرفتار کیا

امریکی وزیر دفاع رابرٹ گیٹس نے، جو کہ آج افغانستان کے دورے پر پہنچے ہوئے ہیں، آسانج کی گرفتاری کا خیر مقدم کیا ہے۔ امریکی افواج کے ایک اڈے پر اخبار نویسوں سے گفتگو کرتے ہوئے گیٹس کا کہنا تھا کہ انہوں نے ابھی اس کے بارے میں سنا تو نہیں لیکن اُن کے نزدیک یہ ایک اچھی خبر ہے۔

تاہم خفیہ دستاویزات شائع کرنے والی ویب سائٹ وکی لیکس نے اعلان کیا ہے کہ اس کے بانی جولیان آسانج کی گرفتاری کے باوجود خفیہ امریکی سفارتی کیبلز کی اشاعت کا عمل جاری رہے گا۔ وکی لیکس کے ٹویٹر اکاؤنٹ پر بھیجے جانے والے ایک پیغام کے مطابق وکی لیکس کے ایڈیٹران چیف جولیان آسانج کے خلاف ہونے والی کارروائی سے ان کے آپریشن پر کوئی فرق نہیں پڑے گا۔ اس پیغام میں مزید کہا گیا ہے کہ آج رات حسب معمول مزید کیبلز شائع کی جائیں گی۔

Wikileaks - Internetseite Cablegate NO FLASH

'آسانج کی گرفتاری سے وکی لیکس کےآپریشن پر کوئی فرق نہیں پڑے گا اور روزانہ حسب معمول مزید کیبلز شائع کی جائیں گی': وکی لیکس

جولیان آسانج کی لندن میں گرفتاری کے بعد وکی لیکس کے بانی کا ایک مضمون ایک آسٹریلوی اخبار میں شائع ہوا ہے۔ اِس میں انہوں نے کہا ہے کہ وکی لیکس عوامی بھلائی کے پیش نظر حقائق کی تلاش میں سرگرداں ہے۔

آسانج کو آج لندن کی ویسٹ منسٹر مجسٹریٹ کی عدالت میں پیش کیا جانا ہے، جہاں متوقع طور پر گرفتاری سے متعلق ان کے معاملے کی سماعت کے لیے تاریخ دی جائے گی، جوکہ برطانوی قانون کے مطابق 21 دن کے اندر اندر ہونی چاہیے۔

جولیان آسانج اپنی زندگی کا ایک بڑا حصہ سویڈن میں گزار چکے ہیں۔ رواں برس کے آغاز میں ان پر الزام لگایا گیا تھا کہ انہوں نے وکی لیکس کے لیے رضاکارانہ طور پر کام کرنے والی دو سویڈش خواتین کو جنسی طور پر ہراساں کیا تھا۔ تاہم ان پر لگایا گیا الزام جنسی زیادتی کی تین کیٹیگریز میں سے سب سے کم نوعیت کا ہے، جس کی زیادہ سے زیادہ سزا چار برس کی قید بنتی ہے۔

رپورٹ: افسر اعوان

ادارت: امجد علی

DW.COM

ویب لنکس