1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

جوتوں کا ہدف زرداری تھے : برطانوی میڈیا

برطانوی میڈیا نے اتوار کے روز اپنی رپورٹس میں گزشتہ شام برمنگھم میں اچھالے جانے والے جوتوں کا ہدف پاکستانی صدر آصف علی زرداری کو قرار دیا ہے۔ صدر زرداری کی جانب جوتے برمنگھم منعقدہ ریلی سے کچھ دیر پہلے پھینکے گئے۔

default

برطانوی اخبار ٹیلیگراف نے ایک عینی شاہد کے حوالے سے لکھا ہے کہ صدر زرداری ایک ہزار افراد کے مجمع سے خطاب کر رہے تھے، جب ایک بزرگ شخص نے اپنے دونوں جوتے ان کی جانب اچھال دئے۔ اس کے فوراﹰ بعد اس شخص کو پولیس حکام نے گرفتار کر لیا تاہم بعد میں اسے رہا بھی کر دیا گیا۔

’’زرداری اپنی تقریر کے درمیان میں تھے، جب مجمع میں سے ایک شخص نے ایک کے بعد دوسرا جوتا صدر زرداری کی طرف اچھال دیا۔‘‘

Pakistan Asif Ali Zardari

صدر زرداری حکمران جماعت پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین بھی ہیں

اخبار کے مطابق یہ جوتے صدر زرداری سے کچھ ہی دور گرے تاہم اس حملے سے پاکستانی صدر محفوظ رہے۔ اس کے فوراﹰ بعد سکیورٹی حکام اس شخص کو ہال سے باہر لے گئے۔

برطانوی پولیس نے بھی اس خبر کی تصدیق کی ہے۔ پولیس کے مطابق ایک شخص کو پاکستانی صدر کی جانب جوتے اچھالنے پر حراست میں لے کر ہال سے باہر نکال دیا گیا۔

یہ واقعہ صدر زرداری کے تقریباً ایک ہفتے طویل دورہء برطانیہ کے اختتام پر ہفتے کے روز پیش آیا۔ اس دورے کے حوالے سے صدر زرداری کو پاکستان میں شدید عوامی تنقید کا سامنا ہے۔ ملک میں شدید ترین سیلابوں کے موقع پر، جب ملک کے بالائی اور وسطی حصوں کے سینکڑوں افراد ہلاک اور لاکھوں بے گھر ہو چکے ہیں، صدر زرداری کا یہ دورہ ملکی میڈیا پر مسلسل بحث کی نذر رہا۔

Pakistan Asifa Bhutto Zardari und Bilawal Bhutto Zardari

حکمران جماعت کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کو بھی اس ریلی میں شریک ہونا تھا، تاہم وہ شریک نہیں ہوئے

برمنگھم میں جس وقت ہال کے اندر پاکستانی صدر 1000 افراد کے مجمع سے خطاب کر رہے تھے، ٹھیک اسی وقت اس ہال سے باہر سینکڑوں افراد صدر زرادری کے خلاف شدید ترین نعرے بازی میں بھی مصروف تھے۔

گزشتہ روز صدر زرداری نے ایک برطانوی اخبار سے اپنے انٹرویو میں اس تنقید کو بلا جواز قرار دیا تھا۔ صدر زرداری کا کہنا تھا کہ ایسے دورے مہنیوں پہلے طے کئے جاتے ہیں اور ان کے اس دورے سے بین الاقوامی برداری کو پاکستان میں سیلاب کی اصل صورتحال سے آگاہی ملی ہے اور ملک کے لئے امداد میں اضافہ ہوا ہے۔

زرداری نے بعد ازاں برمنگھم میں ریلی کے موقع پر ہی اپنی جانب سے سیلاب زدگان کے لئے پانچ ملین روپے امداد کا اعلان بھی کیا۔

دوسری جانب مقامی ذرائع ابلاغ میں ایسی رپورٹس ہیں کہ صدر زرداری پر جوتے اچھالے جانے کی خبر نشر کرنے پر چند مقامی ٹی وی چینلز کی نشریات متعدد علاقوں میں بند کر دی گئیں جبکہ چند اخبارات کی کاپیاں بھی لوٹ لی گئیں۔ مقامی میڈیا کے مطابق حکمران جماعت کے کارکنوں نے کیبل آپریٹروں اور اخبار فروشوں کو دھمکیاں بھی دیں کہ وہ ایسے چینلز کی نشریات بند کریں اور ایسے اخبارات فروخت نہ کریں، جن میں یہ خبر نشر کی گئی ہو۔ مقامی ٹی وی صحافیوں نے اس بندش کے خلاف احتجاج کا بھی اعلان کیا ہے۔

رپورٹ : عاطف توقیر

ادارت : امجد علی

DW.COM

ویب لنکس