1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

جنگ بندی لائن کی خلاف ورزی، بھارتی سفیر طلب

پاکستانی حکومت نے آج منگل کے روز بھارتی سفیر کو طلب کر کے کنٹرول لائن پر بھارتی فوج کی فائرنگ کے نتیجے میں ایک خاتون کی ہلاکت پر احتجاج کیا ہے۔

خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق پاکستانی وزارت خارجہ کی طرف سے جاری ہونے والے بیان میں کہا گیا ہے کہ بھارتی فوجیوں نے آٹھ اگست کو لائن آف کنٹرول پر جندروٹ کے مقام پر فائرنگ کی جس سے فریدہ نامی خاتون پیٹ میں گولیاں لگنے کے سبب شدید زخمی ہوئی۔ یہ خاتون آج منگل 11 اگست کو زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے جاں بحق ہو گئی۔ بیان کے مطابق بھارتی ڈپٹی ہائی کمشنر کو دفتر خارجہ طلب کر کے اس خاتون کی ہلاکت پر احتجاج ریکارڈ کرایا گیا۔

اس بیان کے مطابق، ’’ پاکستان نے بھارتی سکیورٹی فورسز کی طرف سے کوٹلی کے قریب نکیال سیکٹر اور بھمبر گلی سیکٹر میں نو اگست کو کنٹرول لائن پر بلا اشتعال فائرنگ پر احتجاج کیا، جس میں پاکستانی چیک پوسٹوں کو نشانہ بنایا گیا تھا۔‘‘ بیان میں مزید کہا گیا ہے، ’’بھارتی سکیورٹی فورسز نے کنٹرول لائن اور ورکنگ باؤنڈری کی جولائی میں 37 اور اگست میں 24 بلا اشتعال خلاف ورزیاں کیں۔‘‘

پاکستانی دفتر خارجہ سے جاری ہونے والے اس بیان کے مطابق، ’’پاکستانی حکومت نے جنگ بندی کی مسلسل خلاف ورزیوں پر گہرے تحفظات کا اظہار کیا ہے اور بھارت سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ انہیں فی الفور روک دے۔‘‘

دونوں ہمسایہ ممالک کے درمیان 2003ء میں ہونے والے سرحدی جنگ بندی معاہدے کی پابندی عام طور پر دونوں جانب سے کی جاتی ہے

دونوں ہمسایہ ممالک کے درمیان 2003ء میں ہونے والے سرحدی جنگ بندی معاہدے کی پابندی عام طور پر دونوں جانب سے کی جاتی ہے

مسلم اکثریتی آبادی والا علاقہ جموں اور کشمیر بھارت اور پاکستان کے درمیان تقسیم ہے اور دونوں ممالک تقسیم ہند کے بعد سے پورے کشمیر پر اپنا حق جتاتے ہیں۔ روئٹرز کے مطابق دونوں ہمسایہ ممالک کے درمیان 2003ء میں ہونے والے سرحدی جنگ بندی معاہدے کی پابندی عام طور پر دونوں جانب سے کی جاتی ہے تاہم دونوں جانب سے کبھی کبھار خلاف ورزیوں کی رپورٹس بھی ملتی رہتی ہیں۔

خیال رہے کہ پاکستان اور بھارت اب تک دو جنگیں بھی لڑ چکیں ہیں۔ 1989ء سے بھارتی زیر انتظام کشمیر میں مختلف کشمیری گروپ بھارت سے آزادی کی مسلح جدوجہد کرتے ہوئے وہاں تعینات بھارتی سکیورٹی فورسز سے لڑتے رہے ہیں۔ روئٹرز کے مطابق اس لڑائی میں ہزارہا کشمیری ہلاک ہوئے ہیں جن میں سے زیادہ تر سویلین ہیں۔