1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

مہاجرین کا بحران

’جنگل‘ سے مہاجرین کا انخلاء شروع

فرانس کے کیلے نامی مہاجر کیمپ سے مہاجرین کے انخلاء کا کام شروع ہو گیا ہے۔ ’جنگل‘ کے نام سے مشہور اس کیمپ میں چھ تا آٹھ ہزار مہاجرین کو ملک بھر میں قائم مختلف استقبالیہ سینٹرز منتقل کیا جائے گا۔

خبر رساں ادارے اے ایف پی نے بتایا ہے کہ چوبیس اکتوبر بروز پیر کی علی الصبح ہی کیلے میں موجود مہاجرین نے ایسے میٹنگ پوائٹس پر جمع ہونا شروع کر دیا، جہاں سے انہیں فرانسیسی حکام کی زیر نگرانی مختلف سینٹرز پہنچایا جائے گا۔ میڈیا رپورٹوں کے مطاق خواتین، مرد اور بچے اپنا سامان اٹھائے ہوئے رضاکارانہ طور پر ہی میٹنگ پوائنٹس پہنچنا شروع ہو گئے ہیں۔ بعدازاں ان مہاجرین کو مختلف شیلٹر ہاؤسز منتقل کر دیا جائے گا۔

کَیلے مہاجر کیمپ کی بندش سے مسئلہ حل نہیں ہو گا، خیراتی ادارے

’جنگل‘ میں رہیں یا چلے جائیں؟

فرانس کا پہلا مہاجر شیلٹر ہاؤس اکتوبر سے فعال ہو گا

فرانس کے شمالی بندگاہی شہر کیلے کے نواح میں واقع اس عارضی کیمپ میں گزشتہ رات پولیس اور کچھ مہاجرین کے مابین جھڑپیں بھی ہوئیں۔ فرانسیسی حکام پہلے بھی اس کیمپ کو خالی کرانے کی متعدد کوششیں کر چکے ہیں لیکن انہیں اس مقصد میں کامیابی نہیں مل سکی تھی۔ اس کیمپ میں آباد زیادہ تر مہاجرین کا تعلق افغانستان اور افریقی ممالک سے ہے، جن کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ وہ دراصل برطانیہ جانے کے خواہمشند ہیں۔

سوڈان سے تعلق رکھنے والے ایک مہاجرعباس نے اے ایف پی کو بتایا، ’’میں بہت خوش ہوں۔ میں کیلے مہاجر کیمپ سے تنگ آ چکا تھا۔‘‘ اپنا سازوسامان اٹھائے ایک میٹنگ پوائنٹ پر موجود عباس نے مزید کہا، ’’بہت سے لوگ اس کیمپ کو خالی نہیں کرنا چاہتے ہیں۔ لیکن میرے خیال میں مستقبل میں وہاں مسائل زیادہ شدید ہو سکتے ہیں، اسی لیے میں نے اسے خیر باد کہنے کا فیصلہ کیا۔‘‘

کیلے کے مہاجر کیمپ میں موجود اے ایف پی کے ایک نمائندے نے بتایا ہے کہ اتوار کی رات اس کیمپ میں موجود کئی مہاجرین نے وہاں سے نکلنے سے انکار کر دیا تھا جبکہ انہوں نے اس کیمپ کو مسمار کرنے کے خلاف احتجاجی طور پر سکیورٹی اہلکاروں پر پتھراؤ بھی کیا۔ بتایا گیا ہے کہ اس علاقے میں سکیورٹی کی صورتحال کو برقرار رکھنے کی خاطر بارہ سو کے قریب اضافی پولیس فورس بھی تعینات کی گئی ہے۔

Frankreich Räumung Dschungel von Calais (picture-alliance/dpa/E. Laurent)

فرانس کے کیلے نامی مہاجر کیمپ سے مہاجرین کے انخلاء کا کام شروع ہو گیا ہے

امدادی اداروں کا کہنا ہے کہ کیلے میں موجود مہاجرین ایک نئی جگہ جانے سے کترا رہے ہیں کیونکہ وہ سمجھتے ہیں کہ انہیں دوسری جگہ منتقل کر کے واپس ان کے ممالک روانہ کر دیا جائے گا۔ ان میں سے بہت سے مہاجرین پرعزم ہیں کہ وہ کسی طرح برطانیہ پہنچنے میں کامیاب ہو جائیں گے۔

کیلے میں میں گزشتہ اٹھارہ مہینوں سے قائم اس مہاجر کیمپ کی صورتحال انتہائی مخدوش قرار دی جاتی ہے جبکہ حکام اسے سلامتی کے لیے خطرہ بھی قرار دے چکے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ اس بے ترتیب کیمپ میں نہ تو نکاسی آب کا انتظام ہے اور نہ ہی دیگر بنیادی سہولیات دستیاب ہیں۔ امدادی اداروں کے مطابق اس صورتحال میں اس کیمپ میں وبائیں پھیلنے کا خطرہ بھی موجود ہے۔

DW.COM