1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

جنوبی کوریا کا جوابی اقدام، شمالی کوریا پر حملے کی مشق

امریکا کی طرف سے شمالی کوریا کو ’’سخت ملٹری رد عمل‘‘ کی دھمکی کے بعد جنوبی کوریا کی فوج نے آج پیر کے روز ایک میزائل سمندر میں فائر کیا ہے۔ اس کا مقصد شمالی کوریا کی جوہری تجرباتی سائٹ کو نشانہ بنانے کی مشق تھا۔

جنوبی کوریا کی طرف سے یہ اقدام پیونگ یانگ کی طرف سے ایک اپنے اب تک کے سب سے طاقت ور جوہری تجربے کے ایک روز بعد سامنا آیا ہے۔ اتوار تین ستمبر کو شمالی کوریا نے ایک زیر زمین جوہری تجربہ کیا جس کے بارے میں شمالی کوریا کے سربراہ کِم جونگ اُن کی حکومت کا کہنا ہے کہ وہ ایک ہائیڈروجن بم کا دھماکا تھا۔ 2006ء کے بعد سے شمالی کوریا کا یہ چھٹا جوہری دھماکا تھا۔

Nordkorea Kim Jong-Un (Reuters/KCNA)

شمالی کوریا کا دعویٰ ہے کہ اس ہائیڈروجن بم کو بین البراعظمی بیلیسٹک میزائل پر نصب کیا جا سکتا ہے

شمالی کوریا کے اس جوہری تجربے کے بعد امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنے ٹوئیٹر پیغامات میں یہ دھمکی بھی دی کہ وہ ان تمام ممالک کے ساتھ تجارت روک دیں گے جو شمالی کوریا کے ساتھ تجارتی تعلقات رکھتے ہیں۔ خبر رساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس کے مطابق ان کی طرف سے یہ ڈھکے چھپے انداز میں دراصل چین کے لیے انتباہ تھا۔ اس کے علاوہ امریکی حکومت کی طرف سے پیونگ یانگ حکومت کو ’’انتہائی سخت فوجی رد عمل‘‘ کی دھمکی بھی دی گئی ہے۔

جنوبی کوریا کی فوج کی طرف سے بتایا گیا ہے کہ اس ’’لائیو فائر ایکسرسائز‘‘ کا مقصد پیونگ یانگ کو ’’سختی سے متنبہ‘‘  کرنا تھا۔ جنوبی کوریا کے زمین سے داغے جانے والے ’’ہائیون مُو‘‘ Hyunmoo میزائل کو داغنے کی اس مشق میں F-15 لڑاکا طیاروں نے بھی حصہ لیا۔

شمالی کوریا کے جوہری تجربے پر سلامتی کونسل کا خصوصی اجلاس

شمالی کوریا کی طرف سے ہائیڈروجن بم کے کامیاب تجربے کے بعد اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کا ایک خصوصی اجلاس منعقد ہو رہا ہے۔ اس اجلاس میں شمالی کوریا کے اس اقدام پر  عالمی برادری کی جانب سے ردعمل کا فیصلہ کیا جائے گا۔ شمالی کوریا کا دعویٰ ہے کہ اس ہائیڈروجن بم کو بین البراعظمی بیلیسٹک میزائل پر نصب کیا جا سکتا ہے۔

شمالی کوریا کی طرف سے اس نئے جوہری حملے کی عالمی برادری کی طرف سے سخت مذمت کی گئی ہے جبکہ جنوبی کوریا اور جاپان نے مطالبہ کیا ہے کہ شمالی کوریا کے خلاف اقوام متحدہ کی نئی پابندیاں عائد کی جائیں۔

USA UN-Sicherheitsrat in New York - Sondersitzung zu den Rakektentests in Nordkorea (Reuters/A. Kelly)

شمالی کوریا کی طرف سے ہائیڈروجن بم کے کامیاب تجربے کے بعد اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کا ایک خصوصی اجلاس منعقد ہو رہا ہے

امریکی مانیٹرز نے اتوار کے روز شمالی کوریا کی مرکزی جوہری ٹیسٹ سائٹ کے قریب 6.3 کی شدت کے طاقتور زلزلے کے جھٹکے ریکارڈ کیے تھے۔ اس زلزلے کے جھٹکے چین اور روس میں بھی ریکارڈ کیے گئے۔

DW.COM