1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

جنوبی وزیرستان مین ڈرون حملہ، چھ عسکریت پسند ہلاک

پاکستان کے قبائلی علاقے جنوبی وزیرستان میں طالبان عسکریت پسندوں کے ایک ٹھکانے پر آج ایک ڈرون حملہ ہوا ہے، جس میں چھ عسکریت پسند ہلاک اور نو زخمی ہوگئے۔

default

پاکستانی حساس اداروں کے مطابق ایک امریکی جاسوس طیارے نے جنوبی وزیرستان کے ایک گاؤں کنی گورم میں ایک مکان پر دو میزائل داغے۔ فی الوقت اس حملے میں چھ طالبان عسکریت پسندوں کی ہلاکت کی اطلاعات ہیں، تاہم پاکستانی میڈیا میں ہلاک ہونے والے عسکریت پسندوں کی تعداد آٹھ بتائی جا رہی ہے۔

ملکی سیکورٹی فورسز کے ایک افسر نے نام نہ ظاہر کرنے کی شرط پر بتایا: ’’یہ ڈروں حملہ دوپہر تین بجے کے آس پاس کیا گیا، تاہم ابھی تک مصدقہ اطلاعات نہیں ہیں کہ ہلاک شدگان میں عسکریت پسندوں کی تعداد کتنی ہے۔‘‘

Hakeemullah Mehsud Nachfolger für Taliban-Chef ernannt

تحریک ظالبان پاکستان نے بیت اللہ کی ہلاکت کے بعد حکیم اللہ محسود کو اپنا امیر مقرر کیا ہے

جنوبی وزیرستان میں کنی گورم کا علاقہ اس قبائلی ایجنسی کے مرکزی علاقے وانا سے 50 کلومیٹر کے فاصلے پر واقع ہے۔ اسی علاقے کے ایک رہائشی محمد عمر نے فرانسیسی خبر رساں ادارے اے ایف پی کو بتایا: ’’میں نے دو ڈرون طیارے اُڑتے ہوئے دیکھے، جس کے بعد دو دھماکوں کی آواز سنائی دی۔‘‘

امریکی فورسز نے پاکستان کے قبائلی علاقوں میں اس مہینے میں اب تک مبینہ طور پر چار ڈرون حملے کئے ہیں، جن میں سے ایک حملے میں، جو پانچ اگست کو کیا گیا، کالعدم عسکری تنظیم تحریک طالبان پاکستان کے سربراہ بیت اللہ محسود کو لدھا کے علاقے میں ہلاک کیا گیا۔ اس حملے میں بیت اللہ محسود کی اہلیہ بھی ہلاک ہوگئی تھیں۔

اپنے سپریم کمانڈر بیت اللہ محسود کی ہلاکت کی بارہا تردید کے بعد تحریک طالبان پاکستان نے بالآخر گزشتہ پیر کو بیت اللہ کی موت کی تصدیق کر دی۔ ساتھ ہی طالبان عسکریت پسندوں نے اورکزئی، خیبر اور کرّم ایجنسیوں کے طالبان کمانڈر حکیم اللہ محسود کو اپنا امیر اعلٰی بھی مقرر کر دیا۔

پاکستانی حکومت امریکی ڈروں حملوں کی مذمت کرتی رہی ہے، تاہم واشنگٹن انتظامیہ کا موقف ہے کہ مذکورہ حملے اسلام آباد کی اجازت سے کئے جاتے ہیں۔

رپورٹ: انعام حسن

ادارت: امجد علی