1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

جرمن چانسلر چین کے بعد قزاقستان میں

جرمن چانسلرانگیلا میرکل اتوار کو اپنے 5 روزہ غیر ملکی دورے کی آخری منزل قزاقستان پہنچ گئی ہیں۔ اس سے قبل وہ چین میں تھیں۔ انہوں نے اپنے دورہ چین کو ایک خوشگوار تجربہ قرار دیا ہے۔

default

اتوار کو جرمن چانسلر نے قراقستان کے دارالحکومت استانا میں وزیراعظم کریم ماسیموف کے علاوہ اعلیٰ حکومتی شخصیات سے بھی ملاقاتیں کیں۔ اس دوران وہ ایک فورم میں اعلیٰ تجارتی وفود سے بھی ملیں۔ اطلاعات کے مطابق اس فورم کے دوران دونوں ممالک کے مابین کوئی چالیس معاہدوں پر اتفاق رائے کی توقع کی جا رہی ہے۔

اتوار کے دن ہی میرکل قزاقستان کے صدر نورسلطان نذر بایف سے ملاقات کے دوران ہمسایہ ملک کرغزستان کی صورتحال پر بھی تبادلہ خیال کریں گی۔ طے شدہ پروگرام کے مطابق اتوار کی شام کو انگیلا میرکل ایک پریس کانفرنس میں شرکت کے بعد برلن واپس روانہ ہو جائیں گے۔

NO FLASH Merkel in China Wen Jiabao

انگیلا میرکل چینی وزیر اعظم وین جیا باؤ کے ہمراہ

اس سے قبل انگیلا میرکل نے اپنے دورہ چین کے آخری دن چینی وزیراعظم وین جیا باؤ کے ساتھ Xi'an میں واقع جرمنی اور چین کے اشتراک سے کام کرنے والی چند کمپنیوں کا دورہ کیا۔ اس دوران میرکل نے کہا کہ جرمن کمپنی سیمنز دونوں ممالک کے مابین اچھے تعلقات کی ایک مثال ہے۔

اتوار کی صبح میرکل کے ہمراہ چین کا دورہ کرنے والے تجارتی وفود اور چینی تجارتی وفد کے نمائندوں کے مابین چند امور پر اختلافات پائے گئے اور بات چیت کے دوران نوک جھوک دیکھنےمیں آئی۔

Angela Merkel China Besuch Hu Jintao

میرکل چینی صدر ہو جن تاؤ کے ساتھ

جرمن وفد نے چینی حکومت کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ بیجنگ حکومت غیر ملکی سرمایہ کاری کے لئے مناسب ماحول فراہم نہیں کر رہی جبکہ چینی وفد نے جرمنی کے ویزا کے بہت سخت قوانین کو تنقید کا نشانہ بنایا۔

جرمن چانسلر انگیلا میرکل نے اس دورے کے دوران چینی وزیر اعظم کے علاوہ چینی صدر ہو جن تاؤ سے بھی ملاقات کی۔ جرمن چانسلر نے مجموعی طور پراپنے اس دورے کو مثبت قرار دیا اور کہا کہ دونوں ممالک مستقبل میں مزید قریبی تعلقات استوار کرنے کے لئے کوششیں جاری رکھیں گے۔

رپورٹ: عاطف بلوچ

ادارت: کشور مصطفیٰ

DW.COM